کہانی ضرور پڑھیں

”نرس کو چکر دینے کا اچھا طریقہ صحت مند موٹی نرس کے ساتھ کیا کیا؟ کہانی ضرور پڑھیں۔“

میں نے کہا کہ رات کو ایسی کیا بات تھی وہ بولا بس آپ کا چہرہ آنکھوں کے سامنے تھا وہ اس طرح باتیں کرنےلگ گیا کوئی دس منٹ کے بعد میں نے فون بند کر دیا مجھے بار بار اس کا خیال آ رہا تھا پھر چھٹی کے بعد گھر گئی گھر کے کام کاج کے بعد رات کو لیٹ کر میں نے اس کو میسج کیا حال چال پوچھا وہ بہت خوش ہوا کے میں نے اس سے خود بات کی اب ہر رات اس سے بات کر کے سونا میری عادت بن گئی ہےایک رات بات کرتے اسنے کہا زوبی ایک بات پوچھوں برا نہ ماننا میں نے کہا پوچھو وہ کہنے لگا اپنا فیس بک اکاؤنٹ میرے ساتھ شئیر کرو میں نے اس سے کہا ہم اچھے دوست ہیں ہم ایسی باتیں نہیں کریں گے مگر وہ میں منتیں کرنے لگا میں نے بتا دیا اب ہر رات کو کوئی نہ کوئی ایسی مزے دار بات کرتا کہ میں کچھ نہ کہتی مگر ایک رات اس نے کہا زوبی ایک کس دو مجھے میں نے غصے میں فون بند کر دیا وہ کال کرتا رہا مگر میں نے اٹینڈ نہیں کی جب آنکھ کھلی تو اس کے بہت میسج تھے سوری کے میں نے پھر رپلائی کیامگر وہ سو گیا تھا اگلے دن جب میں جاب پہ گی تو رحمان وہاں اپنے بازو پر پٹی کروا کے آیا میں نے جب دیکھا تو اس نے جان بوجھ کر اپنے بازو پر بلیڈ سے زخم بنائے تھے مجھے غصہ بھی آیا بہت میں نے پٹی کرتے وقت پوچھا یہ کیا ہوا تو وہ بولا دوبئی رات کو تم نے معاف نہیں کیا تھا تو میں نے خود کو سزا دی ہے یہ مجھے بہت دکھ ہوا میری آنکھوں میں نہ جانے کیوں آنسو آگئےمیں نے اس کا ہاتھ پکڑ کر اوپر کس کر دی وہ پٹی کروا کر چلا گیا میں نے اس کو میسج کیا پلیز رحمان اب ایسا مت کرنا کبھی مجھے بہت دکھ ہوتا ہے تم بے شک روز رات کو فون پرسو کس کر لو مجھے اس نے رپلائی کیا کیا تم سچ کہہ رہی ہو میں نے آنسوؤں سے بھری آنکھوں سے جواب دیا ہاں رحمن اس نے رپلائی کیا آئی لو یو زوبی میں نے کہا آئی لو یو ٹو رحمان وہ بہت خوش ہوا پھر میں کام میں لگ گئی تھی پھر ہر روز رات کو مجھے کس کرتا مجھے عجیب سا لگتا ہے مگر اچھا بھی لگتا ایک دن میں اس کے ساتھ کار میں بیٹھی تو نظریں نیچی کر لیں رحمان بولا زوبی ناراض ہو کیا میں نے کہا نہیں ڈر لگ رہا ہے کہ کوئی دیکھ نہ لے اس نے ڈرائیونگ شروع کی تو مجھے ایک چھوٹا سا گفٹ دیا میں نے پوچھا یہ کیا کہتا تمہارے لئے لایا ہوں گھر جا کر دیکھ لینا اس نے مجھے ہماری گلی کی نکر پہ اتارا گھر پہنچی تو چھوٹی بہن سے پتہ چلا کہ امی خالہ کے گھر گئی ہے

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *