قرنطینہ سے متعلق بڑی سہولت دے دی

متحدہ عرب امارات: ابوظہبی نے قرنطینہ سے متعلق بڑی سہولت دے دی

کویت 03 ستمبر: اتوار 5 ستمبر سے ابوظہبی میں داخل ہونے والے ویکسین شدہ مسافرقرنطینہ کی شرط سے آزاد ہوں گے۔تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کی ریاست ابوظہبی کے حکام نے گزشتہ روز اعلان کیا ہے کہ کسی بھی ملک سے ابوظہبی آنے والے ویکسین شدہ مسافروں کو اتوار 5 ستمبر سے قرنطینہ کی ضرورت نہیں ہوگی۔ ابوظہبی میں حکام نے ان مسافروں کے لیے خصوصی پروٹوکول کا اعلان کیا ہے جنہوں نے عالمی ادارہ صحت کی طرف سے منظور شدہ ویکسین حاصل کی ہے جو کہ 16 سال اور اس سے زیادہ عمر کے افراد پر لاگو ہو گا۔ سفر سے پہلے ویکسین شدہ سیاحوں کو اپنے ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ کی تصدیق فیڈرل اتھارٹی برائے شناخت اور شہریت (ICA) ویب سائٹ یا ایپ کے ذریعے کرنا ہوگی۔یاد رہے کہ ابو ظہبی میں عوامی جگہوں پر داخلہ صرف ویکسین شدہ افراد جن کے Alhosn ایپ پر ‘گرین پاس’ موجود ہو تک محدود ہے اس طرح وہ سیاح جنہوں نے دونوں خوراکیں حاصل کی ہیں وہ مالز اور دیگر مقامات تک رسائی حاصل کرتے ہیں۔ سیاحوں کے لئے ہدایات درج ذیل ہیں:
الحسن Alhosn ایپلی کیشن پر رجسٹر کریں تاکہ ان کی ویکسی نیشن کی حیثیت اور متحدہ عرب امارات کے اندر کئے گئے ٹیسٹوں کے نتائج دیکھے جاسکیں۔ویکسین لینے والے سیاحوں کے پی سی آر ٹیسٹ لینے کے بعد 30 دنوں کے لیے گرین پاس کو چالو کردیا جائے گا۔ویکسی نیشن کا ثبوت اور ٹیسٹ کے نتائج دکھانے کے لیے سیاح اپنے ملک کی سرکاری ایپ کا استعمال کریں۔بورڈنگ سے پہلے سیاحوں کو روانگی کے 48 گھنٹوں کے اندر موصول ہونے والا پی سی آر ٹیسٹ کا منفی نتیجہ پیش کرنا ہوگا۔بورڈنگ سے پہلے سیاحوں کو روانگی کے 48 گھنٹوں کے اندر موصول ہونے والا پی سی آر ٹیسٹ کا منفی نتیجہ پیش کرنا ہوگا۔گرین لسٹ’ ممالک سے آنے والے ویکسین شدہ سیاحوں کو آمد پر پی سی آر ٹیسٹ کروانا ہوگا اس کے بعد امارات میں قیام کی صورت میں چھٹے دن بھی پی سی آر کروانا ہوگا۔جبکہ دوسرے ممالک سے پہنچنے والے مسافر لازمی طور پر ابوظہبی آمد پر پی سی آر ٹیسٹ کروائیں گے اور اگر امارت میں رہنا ہو تو قیام کے چوتھے اور آٹھویں دن مزید پی سی آر ٹیسٹ لینے ہوں گے۔ ابوظہبی ایمرجنسی کرائسز اینڈ ڈیزاسٹرکمیٹی نے تمام سیاحوں اور زائرین سے کہا کہ وہ امارات میں نافذ احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *