بھاری سرمایہ کاری کرنے کیلئے تیار

جاپانی آٹو کمپنیاں پاکستان کی آٹو انڈسٹری میں بھاری سرمایہ کاری کرنے کیلئے تیار

اسلام آباد ( 6ستمبر 2021) جاپان کی حکومتِ پاکستان کے آٹو انڈسٹری کیلئے اُٹھائے گئے اقدامات کی معترف، جاپانی سفیر نے جاپانی آٹو کمپنیوں کی جانب سے پاکستان میں بھاری سرمایہ کاری کرنے کی نوید سنا دی ۔ تفصیلات کے مطابق جاپانی سفیر نے حکومت پاکستان کے آٹو انڈسٹری کیلئے اقدامات کی تعریف کرتے ہوئے کہا پاکستانی برآمدات بڑھانے کیلئے جائیکا کے تعاون سے سرٹیفکیٹ کا اجرا ہوگا۔وزیرصنعت و پیداوار مخدوم خسرو بختیار سے جاپانی سفیر کی ملاقات ہوئی ، ملاقات میں جاپانی کمپنیوں کی پاکستان میں سرمایہ کاری،تعاون بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔جاپانی سفیر نے حکومت کے آٹو انڈسٹری کیلئے اقدامات کی تعریف کی ، دوران ملاقات خسروبختیار نے بتایا کہ پاکستان نےاسکیم کےذریعےچھوٹی گاڑی کی قیمتیں کم کی ہیں، ملک میں موبائل ڈیوائس پیداواری صنعت کو بڑھایاجا رہا ہے۔وزیرصنعت و پیداوار کا کہنا تھا کہ نئی آٹوپالیسی میں پیداوار وبرآمدات پرتوجہ دی جائے گی، کراچی میں 1500 ایکڑ اراضی انڈسٹریل پارک کیلئے مختص کی ہے، آٹوموبیل،انڈسٹریل پارک زون ،موبائل فونز کی پیداوار میں وسیع مواقع ہیں۔اس موقع پر جاپانی سفیر نے کہا جاپانی آٹو کمپنیوں کو پاکستان میں بھاری سرمایہ کاری کرنے کا کہیں گے۔پاکستانی برآمدات بڑھانے کیلئے جائیکا کے تعاون سے سرٹیفکیٹ کا اجرا ہوگا۔دوسری جانب نئی اور پرانی گاڑیوں کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سامنے آگئی۔ تجزیہ کاروں نے کمپیوٹر چپس کی قلت کو اس کی بڑی وجہ قرار دیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس اور بھارتی ڈیلٹا ویرینٹ کے بعد گاڑیوں میں استعمال ہونے والی کمپیوٹر چپس کی قلت شدید صورت اختیار کر رہی ہے۔گاڑیوں کی قیمتوں کو مصنوعی طور کم رکھا جا رہا ہے جب کہ عالمی سطح گاڑیوں کے پرزہ جات کی قلت کمپیوٹر چپس تک ہی محدود نہیں رہی۔کارساز کمپنیوں کو تاروں، پلاسٹک اور شیشے کی کمی کا سامنا بھی شروع ہو چکا ہے کیونکہ ان کی تیاری میں استعمال ہونے والا خام مال دنیا بھر کی بندرگاہوں میں پڑا ہے اور تیار کرنے والے ممالک تک پہنچنے میں تاخیر صورتحال کو مزید بگاڑ رہی ہے۔کورونا کی دوبارہ آنے والی لہر نے رسد کے مقابلے میں طلب میں اضافہ کر دیا ہے۔یہاں یہ واضح رہے کہ ملائیشیا اور دوسرے ایشیائی ممالک میں کمپیوٹر چپس کی تیار کا آخری مرحلہ مکمل ہوتا ہے جو اس وقت کورونا کی زد میں ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *