مسافر ایئرپورٹس پر خوار ہونے لگے

پاکستان سے امارات جا نے والے متعدد مسافر ایئرپورٹس پر خوار ہونے لگے
کراچی اور اسلام آباد ایئرپورٹس پر مسافروں کو بورڈنگ پاس جاری نہ ہونے کی شکایات سامنے آ گئیں،پاکستان کی کسی نجی لیب میں ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کی سہولت موجود نہیں ہے

دُبئی( 6 اگست 2021ء) متحدہ عرب امارات کی جانب سے 5اگست بروز جمعرات سے پاکستان سمیت چھ ممالک کے مسافروں کو امارات واپس آنے کی مشروط اجازت دے دی گئی ہے۔ اماراتی حکام کے مطابق امارات کا کارآمد ویزہ رکھنے والے واپس آسکیں گے تاہم وہی افراد فوری طور پر سفر کر سکتے ہیں جنہوں نے کورونا سے بچاؤ کی ویکسین کی دونوں خوراکیں لگوا رکھی ہیں اور دوسری خوراک لگوائے ہوئے بھی کم از کم چودہ روز گزر چکے ہوں گے۔ اُردو نیوز کے مطابق پاکستان سے امارات کا سفر کرنے والے پاکستانیوں کو ایئرپورٹس پر انتہائی مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ، کیونکہ متعدد مسافروں کو کراچی اور اسلام آباد ایئرپورٹس پر بورڈنگ پاس جاری نہیں کیا جا رہا ہے۔ اسلام آباد ایئرپورٹ پر امارات جانے کے لیے تیار ایک مسافر نے بتایا کہ ایئر پورٹ حکام نے ’ایئرپورٹ حکام نے سفر سے قبل کورونا ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ نہ کروانے والے مسافروں کو بورڈنگ پاس جاری کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ مسافر کا کہنا تھا کہ ایک رات قبل ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ فراہم کرنے کی ہدایت کی گئی ہے جبکہ پاکستان میں کسی بھی نجی لیب میں ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کی سہولت کی ہی موجود نہیں ہے۔سفر سے 48 گھنٹے قبل کورونا پی سی آر ٹیسٹ اور کورونا سرٹیفکیٹ جمع کروانے کے بعد ہی ٹکٹ بک کرائی تھی تاہم اب سفر کرنے کی اجازت نہیں دی جا رہی۔اس حوالے سے اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے حکام کا موقف تھا کہ ایئر لائن کی جانب سے بورڈنگ پاس کو ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ سے مشروط کیا گیا ہے جس کی وجہ سے مسافروں کو دشواری کا سامنا ہے۔ تاہم متحدہ عرب امارات کے سفارتی حکام نے اردو نیوز کو بتایا کہ اماراتی حکومت کی جانب سے ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کی کوئی پابندی عائد نہیں کی گئی اور آج صبح ملک کے مختلف ایئر پورٹس پر مسافروں کی جانب سے شکایات موصول ہوئی ہیں تاہم اس مسئلہ کو حل کیا جا رہا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.