نوجوانوں کے لیے محفوظ اور مؤثر قرار دے دی گئی

کورونا ویکسین سائنو ویک بچوں، نوجوانوں کے لیے محفوظ اور مؤثر قرار دے دی گئی
سائنو ویک ویکسین کی 2 خوراکوں سے 96 فیصد سے زیادہ بچوں اور نوجوانوں میں کورونا وائرس کی روک تھام کرنے والی اینٹی باڈیز بن گئیں

لاہور (یکم جولائی 2021ء) : پاکستان بھر میں کورونا ویکسین لگانے کا سلسلہ جاری ہے، پاکستان میں اس وقت چینی کمپنی کی ویکسین سائنو ویک لگائی جا رہی ہے جبکہ بیرون ملک سفر کرنے والوں کو فائزر کمپنی کی ویکسین لگائی جا رہی ہے۔ ویکسین کو لے کر عوام میں کئی تحفظات پائے جا رہے تھے تاہم اب چینی کمپنی کی کورونا ویکسین سائنو ویک کو نوجوانوں اور بچوں کے لیے بھی محفوظ قرار دے دیا گیا ہے۔چینی کمپنی سائنوویک کی تیار کردہ کورونا ویکسین 3 سے 17 سال کی عمر کے بچوں کے لیے محفوظ اور طاقتور اینٹی باڈی ردعمل متحرک کرتی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق یہ بات چین میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی کہ سائنو ویک ویکسین کی 2 خوراکوں سے 96 فیصد سے زیادہ بچوں اور نوجوانوں میں کورونا وائرس کی روک تھام کرنے والی اینٹی باڈیز بن گئیں، ان میں ویکسین کے جو مضر اثرات سامنے آئے، ان کی شدت معمولی یا معتدل تھی جن میں انجیکشن کے مقام پر تکلیف سب سے عام علامت تھی۔سائنو ویک لائف سائنسز کمپنی لمیٹڈ کے چیانگ گا نے بتایا کہ بچے اور نوجوانوں میں بالغ افراد کے مقابلے میں کووڈ 19 کی شدت عموما معمولی ہوتی ہے یا علامات ظاہر نہیں ہوتیں، تاہم کچھ کو کووڈ کی سنگین شدت کا خطرہ ہوتا ہے اور وہ وائرس کو دیگر تک منتقل بھی کرسکتے ہیں، تو یہ بہت اہم ہے کہ ان میں کووڈ ویکسینز کے محفوظ اور مؤثر ہونے کی آزمائش کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ٹرائل میں دریافت کیا گیا کہ کورونا ویک اس عمر کے گروپ کے لیے محفوظ اور طاقتور مدافعتی ردعمل کو متحرک کرتی ہے جو بہت حوصلہ افزا ہے اور اب دیگر خطوں میں مزید ٹرائلز کیے جائیں گے جن میں زیادہ تعداد میں بچوں اور نوجوانوں کو شامل کرکے اہم ڈیٹا حاصل کیا جاسکے گا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.