قانونی اور آسان سا طریقہ

واپڈا کبھی نہیں بتائے گا ، اے سی کو چار روپے فی گھنٹہ چلانے کا شاندار ، قانونی اور آسان سا طریقہ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) ناظرین گرمیاں ہیں اور ہر گھر میں اے سی چلتا ہے جس کی وجہ سے گھروں میں بجلی کا بل استطاعت سے اکثر باہر ہوتا ہے ۔ چلو پانچ ، چھ ہزار ہو تو کوئی بات نہیں مگر بیس، پچیس ہزار یہ حقیقتاً اتنا بل ہے کہ جسے ادا کرنا ہر پاکستانی کے بس کی بات نہیں مگر قارئین آج ہم آپ کو بتائیں گے۔ اے سی کو 4روپے فی گھنٹہ چلانے کا ایسا آسان اور شاندار نسخہ کہ آپ ہمیں دعائیں دیں گے ۔ قارئین سب سے پہلے تو آپ نے کوشش کرنی ہے کہ گرمیوں میں میٹرپر زیادہ لوڈ نہ ڈالا جائے۔ یعنی ایک ہی وقت میں ، اے سی ، کولر ، فریج ، استری ، گیزر پانی والی موٹر یا ایسی ہی مختلف چیزوں کو ایک ساتھ نہ چلایا جائے کیونکہ یہ سب چیزیں ایک ساتھ چلنے سے آپ کے بجلی کے میٹر پر بے پناہ بوجھ پڑتا ہے جس کی وجہ سے بجلی کا بل بہت زیادہ آتا ہے کیونکہ ان چیزوں کو ایک ساتھ چلانے سے میٹر چلتا نہیں بلکہ بھاگتا ہے ۔ تو جس وقت جس چیز کی ضرورت ہو وہی چیز چلائیں اور باقی سب چیزیں بند رکھی جائیں ۔ پلے پہل ہمارے گھروں میں ایک روٹین ہوتی تھی کہ جب ہمارے گھروں میں واٹر پمپ چلایا جا تا تھا تب فریج بند کر دیا جاتا تھا اور استری بھی نہیں چلائی جاتی تھی ، اسی طرح جب استری استعمال کرنا ہوتی تو دوسری بڑی مشینیں بند کر دی جاتی تھیں جس کی وجہ سے بجلی کا بل بہت کم آتا تھا ۔ تو چلیں اب آپ کو بتاتے ہیں وہ طریقہ جس کے ذریعے آپ کا اے سی ایک گھنٹے میں چار روپے بجلی خرچ کرے گا مگر اس سے پہلے اے سی کے فنکشن کو سمجھنا پڑے گا۔ قارئین ایک ٹن کااے سی ایک گھنٹے میں تقریباً گیارہ سو ساٹھ واٹ بجلی استعمال کرتا ہے وہ بھی اس صورت میں جب اے سی پورا گھنٹا اپنی پوری قوت کیساتھ چل رہا ہو ۔ لیکن اگر اسی کنوینشل اے سی کی بجائے آپ کے کمرے میں اِنورٹر لگا ہوا ہو۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *