ایک خاتون صحافی نے حیران کن بات کہہ ڈالی

ایک خاتون صحافی نے حیران کن بات کہہ ڈالی

لندن (ویب ڈیسک) جب سے عمران خان نے سرعام اپنی بیگم بشریٰ بی بی کا شکریہ ادا کیا تقریر کے شروع ہونے سے پہلے، کہ ’’میں بشریٰ بیگم کا شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے میرے لئے بہت دعائیں کیں‘‘۔ تب سے ہمیں عمران خان کے یہ الفاظ ہضم نہیں ہو رہے ٹھیک نامور خاتون صحافی رخسانہ رخشی اپنے ایک آرٹیکل میں لکھتی ہیں ۔۔۔۔۔۔۔ اسی طرح جس طرح اپوزیشن کو ان کی تقریر ہضم نہیں ہو رہی۔ بھلا میاں بیوی کی خوبصورت زندگی میں ہر لمحہ حسین ورومان پرور ہوتا ہے ہر تنہائی کی ساعت انہیں ایک دوسرے میں گم ہونے کا موقع دیتی ہے جس میں وہ ایک دوسرے کی تعریف سے لے کر ایک دوسرے کو خوش رکھنے پر شکریہ ادا بھی کر سکتے ہیں۔ تو سرعام اپنی بیگم کا شکریہ ادا کرنا وہ بھی ان حالات میں جب ملک میں پھیلے گہرے مسائل توجہ طلب ہوں جب کشمیر کی وادی خونی منظر پیش کر رہی ہو تو ایسے میں صرف اپنے شوہر کیلئے دعا کرنا وہ بھی سرعام شوہر کا اظہار تشکر۔ سبھی جانتے ہیں کہ یہ رشتے جذباتی وابستگی،دنیاوی رسم ورواج سے ہٹ کر ایک الگ سادہ دلوں کا روحانی ملاپ تھا جو محترمہ پیرنی صاحبہ کو الہام کے وار سے حاصل ہوا جس میں ابرو کے تیر کمان سے لے کر دوسری ادائوں کے وار کی ضرورت نہیں پڑی بس آسانی سے گہرا روحانی تعویذ وعملیات کا عمل شروع ہوا اور پھر دونوں نے اپنی اپنی منزل کو پا لیا۔ اس سلسلے میں کافی لے دے ہوئی مگر ہر قدغن سے خود کو خود ہی آزاد کرکے اپنے روحانی ملن کا اہتمام کر لیا۔یہ تمام معاملے کا موضوع کلام تو تب سے شروع ہے جب سے اس رشتے کو روحانی ملاپ کا نام دیا مگر ابھی سوشل میڈیا نے ٹی وی کی ایک رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ محترمہ بشریٰ کا عکس آئینے میں

 

Sharing is caring!

Comments are closed.