میں نے اس کی زبا ن نہیں کھینچ لی

مندوخیل اپنے ہوش میں نہیں تھے، شکر کریں میں نے اس کی زبان نہیں کھینچ لی
جب دیکھا کہ قادر مندوخیل اپنے ہوش و حواس میں نہیں ہیں تو جاوید چوہدری کو کہا کہ 15 پر کال کر کے پولیس کو بلائیں۔معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان کا بیان

لاہور(31 مئی 2021ء) معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ٹاک شو کے دوران لڑائی جھگڑے سے متعلق کہنا ہے کہ میں نے جاوید چوہدری کو کہا تھا کہ 15 پر کال کر کے پولیس کو کال کریں۔بطور ڈاکٹر میں محسوس کر سکتی تھی کہ قادر مندوخیل اپنے ہوش میں نہیں تھے۔جس طرح سے وہ گالم گلوچ کر رہے تھے واضح تھا کہ وہ اپنے ہوش و حواس میں تھے اور اسی وجہ سے میں نے کہا کہ پولیس کو بلایا جائے۔جس طرح کی گالیاں دے رہے تھے اس سے لگ رہا تھا کہ یہ پیپلز پارٹی کے نمائندے نہیں ہیں،یہ کہیں نہ کہیں ڈی ریل ہوا ہے۔سیاست عزت کے لیے ہوتی ہے۔میں ایسی سیاست پر لعنت بھیجتی ہوں جس میں والد کو کچھ کہا جائے۔میں اس کی زبان نہ کھینچ لوں،آپ شکر کریں میں نے اس کی زبان نہیں کھینچ لی۔علاوہ ازیں ٹاک شو میں مہمانوں کو جھگڑنے سے نہ روکنے پر تنقید کے بعد میزبان جاوید چوہدری کا ردعمل سامنے آ یا ہے۔جاوید چوہدری نے کہا کہ مجھ پر کی جانے والی تنقید غلط اور بے بنیاد ہے، انہوں نے کہا کہ ٹاک شو مین دونوں مہمانوں کے درمیاں ہونے والی تلخ کلامی جیسے ہی بڑھی تو ہم نے فورا بریک لے لیا، لیکن اس کے بعد مہمانوں کے درمیان یہ تلخ کلامی ہاتھا پائی میں بدل گئی-ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے جاوید چوہدری نے کہا کہ فردوس عاشق صاحبہ نے پہلے قادر مندوخیل کو گالی دی اور تھپڑ رسید کیا، قادر مندخیل نے فردوس صاحبہ کو نہ گالی دی اور نہ ہی ان کے مرحوم والدین کے حوالے سے کوئی غلط الفاظ استعمال کیے انہوں نے کہا کہ جب پروگرام میں مہمان ایک دوسرے کی کارکردگی پر تنقید کرے تو ہم کچھ نہیں کہہ سکتے، لیکن اگر کوئی ایک دوسرے پر ذاتی تنقید کرے تو ہم پروگرام میں بریک لے لیتے ہیں، انہوں نے کہا کہ فردوس عاشق اعواں صاحبہ کی ایک بری عادت یہ ہے کہ جب بھی پروگرام میں کوئی بولنے لگتا ہے تو وہ فورا سے بیچ میں ٹوکنا شروع ہو جاتی ہیں، انہوں نے کہا کہ جب فردوس صاحبہ نے قادر مندوخیل کی بات کاٹی تو قادر مندوخیل نے اس پر برہمی کا اظہار کیا اور فردوس صاحبہ پر تنقید کی جس کے بعد بات تلخ کلامی اور بعدازاں ہاتھا پائی تک جا پہنچی- سینئر صحافی جاوید چودھری نے کہا کہ مجھ پر تنقید کرنا غلط ہے میں نے دونوں مہمانوں کے درمیاں بیچ بچاو کی نہ صرف کوشش کی بلکہ بریک کے بعد دونوں مہمانوں کے درمیان صلح کروائی اور دونوں کو پروگرام ختم کرنے کیلئے راضی کیا، تاہم پروگرام ختم ہونے کے بعد قادر مندوخیل سٹوڈیو سے بھاگ گئے اور باہر سے کنڈی لگا لی، جس کے بعد ہم سب لوگ سٹوڈیو میں بند ہو گئے- واضح رہے کہ آج فردوس عاشق اعوان نے قادر مندوخیل کو ہرجانے کا لیگل نوٹس بھجوا دیاہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *