وارداتوں کی حد کر ڈالی

سعودی عرب میں بھارتی باشندوں نے وارداتوں کی حد کر ڈالی
ریاض: سعودی عرب میں روزگار کی غرض سے لاکھوں غیر ملکی مقیم ہیں جن میں زیادہ بڑی تعداد پاکستانی اور بھارتی باشندوں کی ہے۔مملکت میں چوری اور ڈاکے میں ملوث ہونے پر جو غیر ملکی پکڑے جاتے ہیں، ان کا زیادہ تعلق انہی دو ممالک سے ہوتا ہے۔

سعودی عرب میں اب ایک ایسا بھارتی گینگ پکڑا گیا ہے جس نے کوئی آٹھ دس نہیں بلکہ 41 وارداتیں کر رکھی تھیں۔ریاض پولیس کے ترجمان میجر خالد الکریدیس نے بتایا کہ پولیس نے دو بھارتی اور ایک سری لنکن باشندے پر مشتمل گینگ کو گرفتار کر لیا ہے جو چوری کی متعدد وارداتوں میں ملوث تھا۔ ملزمان زیر تعمیر عمارتوں میں گھس کر وہاں سے کیبلز اور سرکٹ بریکرز چرا کر انہیں سکریپ کے طور پر فروخت کرتے تھے۔ ملزمان سے 7 لاکھ 38 ہزار ریال مالیت کا چرایا گیا سامان بھی برآمد کر لیا گیا ہے
ملزمان کی عمریں 50برس کے قریب بتائی گئی ہیں۔ واضح رہے کہ چند روز قبل ریاض پولیس نے 8 افراد کا گینگ پکڑ ا تھا جس میں پانچ پاکستانی اور 3 افغانی شامل ہیں۔ یہ گینگ خود کو پولیس اہلکار ظاہر کر کے درجنوں افراد سے لاکھوں ریال لوٹ چکے تھے۔ ان پاکستانی و افغانی جرائم پیشہ افراد نے تازہ ترین واردات ایک پاکستانی کے ساتھ کی تھی۔ جو ایک کمپنی کے دفتر میں ملازم کرتے تھے۔یہ ڈکیت گینگ سیکیورٹی اہلکاروں کے روپ میں ایک بینک کے باہر گھات لگائے بیٹھا تھا۔جونہی پاکستانی ملازم رقم لے کر باہر نکلا تو تھوڑی دور جا کر ان ڈکیتوں نے اسے ڈرا دھمکا کر اس کے پاس موجود کمپنی کی 4 لاکھ 15 ہزار ریال کی رقم لوٹ لی تھی۔ واردات کرنے والوں کی عمریں 22 سے 40 سال کے درمیا ن تھیں۔ پولیس نے لاکھوں ریال کی اس واردات میں ملوث گینگ کو پکڑنے کے لیے ایک خصوصی ٹیم تشکیل دی۔ جس نے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے گینگ کے تمام افراد کا سراغ لگا کر ان کے ٹھکانوں سے گرفتار کر لیا اور ان سے لوٹی ہوئی رقم بھی بازیاب کرا لئی۔ ریاض پولیس کے ریجنل ترجمان میجر الکریدیس نے بتایا کہ ملزمان کے خلاف لوٹ مار اور خود کو پولیس اہلکار ظاہر کرنے کے الزامات کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ اور عدالت میں پیش کرنے کے لیے پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

 

Sharing is caring!

Comments are closed.