ملازمت کے حوالے سے اہم خبر دے دی

سعودی عرب نے تارکین کو ملازمت کے حوالے سے اہم خبر دے دی
ملازمت کا معاہدہ تین برس کے بعد لامحدود مُدت کے معاہدے میں تبدیل ہو جائے گا

ریاض( 10 جون2021ء) سعودی وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود کے سیکریٹری برائے لائحہ جات عادل الیوسف نے کہا ہے کہ’اگر ملازمت کا معاہدہ تین برس سے زیادہ مدت تک چلتا رہے تو وہ لامحدود مدت کے معاہدے میں تبدیل ہوجائے گا‘۔العربیہ چینل سے گفتگو کرتے ہوئے عادل الیوسف نے کہا کہ’یہی قانون سالانہ معاہدوں والے سرکاری ملازمین پر بھی لاگو ہو گا‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ’ اگر ان کی ملازمت کا معاہدہ تین برس سے زیادہ مدت تک جاری رہے تو ایسی صورت میں نجی اداروں اور کمپنیوں کے ملازمین کی طرح ان کی ملازمت کا معاہدہ بھی غیر معینہ مدت والے معاہدہ ملازمت کی شکل اختیار کرلے گا‘۔وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود کے سیکریٹری نے بتایا کہ ’سعودی کابینہ نے حال ہی میں جن سرکاری اداروں کی نجکاری کا فیصلہ کیا ہے ان کے حوالے سے نئے قواعد و ضوابط لاگو ہوں گے‘۔’نئے ضوابط کا تعلق سعودی ملازمین کی ریٹائرمنٹ اور معاہدہ ملازمت کے اختتام پر نہایة الخدمة (اینڈ آف سروس) وغیرہ امور سے ہے‘۔واضح رہے کہ سعودی مملکت میں کئی دہائیوں سے کفالت کا نظام رائج تھا۔ اس نظام میں غیر ملکی کارکن سعودی کفیل کے رحم و کرم پر ہوتے تھے جس کی وجہ سے ان کا استحصال بہت زیادہ بڑھ جاتا تھا۔ لاکھوں کارکنان کو اپنے کفیلوں سے شکایت ہوتی تھی کہ وہ ان سے بے جا ڈیوٹی کرواتے ہیں، سختی سے کام لیتے ہیں اور تنخواہوں کی ادائیگی بھی وقت پر نہیں کرتے ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *