قرنطینہ ضوابط جاری ہو گئے

سعودیہ آنے والے غیر ملکیوں کے لیے نئے قرنطینہ ضوابط جاری ہو گئے
تمام افراد کو ہوٹل میں قرنطینہ اختیار کرنا ہوگا، اس مقصد کے لیے قرنطینہ پیکیج خریدنا پڑے گا

ریاض(25 جون2021ء ) سعودی عرب نے غیر ملکیوں کے مملکت آنے پر نئے قرنطینہ ضوابط جاری کر دیئے ہیں جن کے مطابق اب تمام غیر ملکی مسافروں کو ہوٹل میں قرنطینہ اختیار کرنا ہوگا، جس کے اخراجات مسافر خود برداشت کریں گے۔اُردو نیوز کے مطابق محکمہ شہری ہوابازی نے تاکید کی ہے کہ مملکت سے روانگی سے قبل غیرملکی کو منظور شدہ لیبارٹری سے پی سی آر کی منفی رپورٹ پیش کرنا ہوگی اور اپنے ملک کے سرکاری ادارے سے مصدقہ ویکسین سرٹیفکیٹ پیش کرنا ہوگا-اس حوالے سے یہ پابندی بھی لازمی ہوگی کہ ویکسین وہ ہو جو سعودی عرب میں منظور شدہ ہو۔غیرملکی کو ہوٹل قرنطینہ پیکیج بھی خریدنا پڑے گا۔ تاہم ہوٹل قرنطینہ کی پابندی کا اطلاق مندرجہ ذیل زمروں پر نہیں ہوگا۔۔ سعودی خواتین و حضرات، سعودی کی غیرملکی بیوی اور ماں، سعودی خاتون کا غیرملکی شوہر اور اس کی ماں، سعودی خاتون کے غیرملکی بیٹے و بیٹیاں اور سعودی فیملی کے ہمراہ آنے والے گھریلو کارکن۔ اس زمرے میں شامل افراد کو ہوٹل کی بجائے سات روز کے لیے گھر پر ہی قرنطینہ اختیار کرنا ہوگا تاہم چھٹے روز پی سی آر ٹیسٹ کرانا ہوگا۔ ممنوعہ ممالک سے آنے والے مستثنی زمروں میں شامل غیر ویکسین یافتہ سعودی شہریوں سے پی سی آر ٹیسٹ طلب نہیں کیا جائے گا البتہ انہیں 7 روز تک ہاوٴس آئسولیشن کا پابند بنایا جائے گا اور چھٹے روز پی سی آر ٹیسٹ کے لیے کہا جائے گا۔ ویکسین یافتہ سعودی شہری ہاوٴس آئسولیشن اور چھٹے روز پی سی آر ٹیسٹ کی پابندی سے بھی مستثنی ہوں گے۔ غیر ویکسین یافتہ سعودی شہریوں پر پابندی ہوگی کہ وہ مملکت سے باہر جاتے وقت سفر سے قبل 72 گھنٹے اندر پی سی آر ٹیسٹ کرائیں- ایسے شہریوں پر ہوٹل قرنطینہ یا مملکت واپسی پر پی سی آر کی پابندی نہیں ہوگی۔غیر ویکسین یافتہ صحت کارکنان، انکے اہل و عیال اور 18 برس سے کم عمر کے ان کے اعزہ سے مملکت سے روانہ ہونے سے قبل 72 گھنٹے قبل پی سی آر ٹیسٹ کے لیے کہا جائے گا-

Sharing is caring!

Comments are closed.