ملازمین پر سخت پابندیاں عائد ہو گئیں

سعودیہ میں ریسٹورنٹس،فوڈ پوائنٹس، باربر شاپس و بیوٹی پارلر کے ملازمین پر سخت پابندیاں عائد ہو گئیں
یکم شوال تک ویکسین لگوانے کی مہلت ختم، ویکسین نہ لگوانے والے ملازمین کوہر ہفتے کورونا ٹیسٹ کروانا ہوگا

ریاض(15مئی 2021ء) سعودی عرب میں تین کاروباری شعبوں کے کارکنان کو ویکسین لگوانے کے لیے دی گئی مہلت یکم شوال کو ختم ہو گئی ہے، جس کے بعد اب انہیں اپنے ہر ہفتے میں ایک بار اپنے خرچے پر کورونا پی سی آر ٹیسٹ کروانا ہوگا ، ورنہ انہیں اپنی دُکان یا کاروباری مرکز پر داخل ہونے کی اجازت نہیں ہو گی۔ جس کا سیدھا سیدھا مطلب ملازمت سے ہاتھ دھونا ہے۔سعودی میڈیا کے مطابق حکومت نے گزشتہ ماہ اب ریسٹورنٹس، فوڈ پوائنٹس اور سٹالز کے علاوہ باربر شاپس اور بیوٹی پارلر کے کارکنان پر لازمی ویکسی نیشن کی شرط عائد کی تھی۔ سعودی وزارت بلدیات و دیہی امور کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا کہ مندرجہ بالا شعبوں کے کارکنان لازمی ویکسین لگوائیں، ورنہ وہ اپنی نوکری سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔وزارت کی جانب سے تنبیہ کی گئی تھی کہ 13 مئی بمطابق یکم شوال سے اس پابندی کا اطلاق ہو جائے گا۔اس ڈیڈ لائن سے پہلے پہلے ریسٹورنٹس،فوڈ پوائنٹس، باربر شاپس اور بیوٹی پارلر کے کارکنان کوویکسی نیشن کی شرط لازمی پوری کرنی ہو گی۔ اگر ان اداروں کے کسی بھی کارکن نے 13 مئی 2021ء تک ویکسین نہ لگوائی تو پھر اسے ہر سات روز بعد پی سی آر ٹیسٹ کروا کر منفی رپورٹ حاصل کرنا ہوگی۔ اس ٹیسٹ کی فیس کارکن کی دُکان یا ادارے کے مالک کے ذمہ ہی ہو گی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.