کورونا کی تشویشناک صورتحال

کورونا کی تشویشناک صورتحال، وزیراعظم کا بھارت کے ساتھ یکجہتی کا اظہار
بھارت سمیت دنیا بھر میں کورونا مریضوں کی جلد صحیتابی کے لیے دعاگو ہوں،ہمیں مل کر انسانیت کا سامنا کرنے والے اس عالمی چیلنج کا مقابلہ کرنا چاہیے۔وزیراعظم عمران خان کا ٹویٹ

اسلام آباد (24 اپریل 2021ء) : بھارت میں کورونا وائرس کی صورتحال مزید سنگین ہو گئی ہے۔ہمسایہ ملک بھارت میں کورونا نے تباہی مچائی ہوئی ہے۔کورونا کی تشویشناک صورتحال نے بھارت کو شدید مشکلات سے دوچار کر رکھا ہے۔ملک میں آکسیجن کی بھی قلت ہوگئی ہے۔اسی حوالے سے وزیراعظم عمران خان کا بھی اہم بیان سامنے آیا ہے۔انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے بھارت سے اظہار یکجہتی کی۔وزیراعظم نے کہا کہ ہندوستانی عوام کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کرنا چاہتا ہوں کیونکہ وہ کورونا وائرس کی ایک خطرناک لہر سے لڑ رہے ہیں۔ ہماری دعائیں بھارت سمیت دنیا بھر میں وبائی امراض میں مبتلا تمام لوگوں کے ساتھ ہیں،اللہ تمام مریضوں کو جلد صحتیاب کرے۔وزیراعظم نے مزید کہا کہ ہمیں مل کر انسانیت کا سامنا کرنے والے اس عالمی چیلنج کا مقابلہ کرنا چاہیے۔بھارت میں گزشتہ روزصرف 24 گھنٹوں میں 23 اپریل کو کورونا وائرس کے 3 لاکھ 32 ہزار 730 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جب کہ 2263 مریض انتقال کر گئے ۔ یہ اعداد و شمار دنیا میں یومیہ کیسز کی سب سے زیادہ تعداد بھی ہے۔ بھارتی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق بھارت میں ایک کروڑ 60 لاکھ سے زائد افراد اس وبا کا شکار ہوچکے ہیں جب کہ اموات کی مجموعی تعداد ایک لاکھ 86 ہزار 920 ہوچکی ہے۔دہلی حکومت کے آن لائن ڈیٹا بیس کے مطابق دو تہائی سے زائد اسپتال مکمل طور پر بھر چکے ہیں۔ عوام کو بلا ضرورت گھر سے نکلنے سے گریز کرنے کی ہدایات کی جا رہی ہیں ۔ دوسری جانب وبا کی تیزی سے بگڑتی صورتحال کے باعث ملک میں صحت کا نظام بری طرح متاثر ہوگیا ہے۔کئی اسپتالوں میں آکسیجن کی مصنوعی قلت بھی پیدا کی جا رہی ہے جس سے اسپتالوں میں موجود کئی مریضوں کی حالت تشویشناک بھی ہوئی۔ اسپتالوں میں جگہ کی کمی کی وجہ سے بھارت میں کئی شہری اسپتالوں کے سامنے ہی پگڈنڈیوں اور فُٹ پاتھ پر سونے پر مجبور ہو گئے ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.