چین کی کرونا ویکسین کی افادیت سے متعلق حیران کن انکشاف ،چینی اعلیٰ عہدہ دار نے اعتراف کر لیا

چین کی کرونا ویکسین کی افادیت سے متعلق حیران کن انکشاف ،چینی اعلیٰ عہدہ دار نے اعتراف کر لیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )چین کے ایک اعلیٰ عہدہ دار نے کورونا وائرس کے خلاف ملک میں تیار کی جانے والی ویکسین کی کم افادیت کا اعتراف کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق متعدی امراض کی روک تھام کے چینی مرکز کے سربراہ گاؤ فو نے بیجنگ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ چین کورونا ویکسین کی افادیت بہت زیادہ حوصلہ افزا نہیں ہے۔نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق چین کوڈ-19 ویکسین کو زیادہ موثر بنانے کے لیے اس میں دوسری ویکسینز ملانے کے طریقہ کارغور کررہا ہے۔انہوں نے کہا کہ چین کی موجودہ ویکسینز کی عالمی وبا کے خلاف تحفظ کی شرح اور افادیت بہت زیادہ نہیں ہے۔ چین ان کورونا ویکسینز کی افادیت کو بڑھانے کے لیے اس میں دوسری ویکسین ملانے پر غور کررہا ہے۔برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق چین نے عوامی سطح پر استعمال کے لیے چار مخلتف ویکسینز کی منظوری دی ہے، تاہم بیرون ممالک ان ویکسینز پر ہونے والی آزمائشوں میں ان کو 50 فیصد تک مؤثر قرار دیا جاچکا ہے۔چین میں ایک کروڑ سے زائد افراد کو کورونا ویکسین کا کم از کم ایک ٹیکہ دیا جاچکا ہے۔پریس کانفرنس کے کچھ لمحے بعد سرکاری میڈیا گلوبل ٹائمز سے گفتگو کرتے ہوئے گاؤ فو نے کہا کہ ان کے بیان کی غلط تشریح کی گئی ہے۔انہوں نے اصرار کیا کہ چین کی کورونا ویکسینز بہت حد تک موثر ہیں۔ ویکسین کے عمل کو “بہتر بنانے” کے اقدامات کے طور پر خوراک کی تعداد اور ٹیکہ لگنے کے بعد ٹائم کو لمبا کیا جانا چاہیے۔ اس کو زیادہ مؤثر بنانے کے لیے کوڈ-19 ویکسین میں دوسری ویکسین کو شامل کیا جانا چاہیے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *