پاکستان سے یو اے ای جانے والوں کوخبردار کر دیا گیا

پاکستان سے یو اے ای جانے والوں کوخبردار کر دیا گیا
تین ہزار درہم سے زائد مالیت کے تحائف اور 2 سو سے زائد سگریٹس لانے کی اجازت نہیں ہو گی، 60 ہزار درہم سے زائد نقدی اور زیورات ظاہر کرنا ہوں گے

دُبئی(2021ء) متحدہ عرب امارات جانے والے پاکستانیوں کو اس بات کی خبر ہونی چاہیے کہ اماراتی پالیسی کے مطابق کرنسی، زیورات اور دیگر سامان اور تحائف لانے کی ایک حد مقرر کی گئی ہے، جس پر عمل نہ کرنا پریشانی کاباعث بن سکتا ہے۔ یو اے ای کی فیڈرل کسٹمز اتھارٹی (FCA)نے آگاہ کیا ہے کہ اماراتی مملکت آنے والے تمام مسافروں کو تحائف، سگریٹس، الکوحل، کرنسی اور جیولری سے متعلق اماراتی کسٹم پالیسی کے بارے میں علم ہونا چاہیے کیونکہ اس پالیسی کی خلاف ورزی انہیں ایئر پورٹس پرمشکل میں پھنسا سکتی ہے۔کسٹمز حکام کا کہنا ہے کہ امارات آنے والے مسافر اپنے ساتھ زیادہ سے زیادہ تین ہزار درہم مالیت کے تحفے لا سکتے ہیں۔ کسٹمز اتھارٹی کی جانب سے لوگوں کی آگاہی کے لیے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر کسٹمز پروسیجر سے متعلق ایک ویڈیو تین زبانوں عربی، انگریزی اور اُردو میں پوسٹ کی گئی ہے، جس میں مسافروں کے حقوق اور فرائض سے متعلق بھی تفصیلات فراہم کی گئی ہیں۔کسٹمز حکام کے مطابق مسافر اپنے ساتھ تین ہزار درہم سے زائد مالیت کے تحائف نہیں لا سکتے۔ اسی طرح 2 سو سے زائد سگریٹس لانے کی اجازت نہیں ہے۔ مسافروں کو اپنے ساتھ نقد رقم اور زیورات لانے کی اجازت ہو گی، تاہم اگر کرنسی نوٹوں، جیولری اور قیمتی پتھروں وغیرہ کی مالیت 60 ہزار درہم سے زائد ہو تو انہیں کسٹمز حکام کے سامنے ظاہر کرنا پڑے گا۔ یہ سامان یا نقدی چھپانے پر سخت قانونی کارروائی ہو گی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.