اسٹیبلشمنٹ سے ناراض ہیں

عمران خان غصے میں ہیں، اسٹیبلشمنٹ سے ناراض ہیں
ممکن ہے کہ عمران خان اسمبلیاں توڑ دیں،اور اب انہیں پچھلی مرتبہ کی طرح اسمبلیاں توڑنے سے روکا نہیں جائے گا،اگلا آپشن پھر شہباز شریف تو ہے ہی۔ ہارون الرشید کا تجزیہ

اسلام آباد (03 اپریل2021ء) سینئر تجزیہ کار ہارون رشید کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان غصے میں ہیں اور اسٹیبلشمنٹ سے ناراض نہیں مگر وہ اسٹیبلشمنٹ سے ناراض ہیں، ممکن ہے کہ وہ اسمبلیاں توڑ دیں ۔پچھلی دفعہ جب یوسف رضا گیلانی کا معاملہ ہوا تھا تو انہوں نے ارادہ کیا کہ تاہم انہیں مشورہ دیا گیا کہ اسمبلیاں نہ توڑیں اور پھر عمران خان نے مشورہ مان لیا۔ ہارون رشید نے مزید کہا کہ اس مرتبہ ممکن ہے وہ اسمبلیاں توڑنے کا ارادہ کریں تو ہو سکتا ہے انہیں نہ روکا جائے۔جب اسمبلیاں توڑ دیں گے تو پھر اللہ بہتر جانتا ہے کہ کیا ہو گا ،شہباز شریف تو ہے ہی۔حفیظ شیخ کا جو فیصلہ ہوا ہے۔یہ اسٹیبلشمنٹ سے کہہ رہے ہیں کہ میں آپ کا آدمی نکال رہا ہوں۔ہارون رشید نے مزید کہا کہ یوسف رضا گیلانی کے جتنے کا فائدہ خان صاحب کا ہوا ہے ،نقصان تو ن لیگ اور پی ٹی ایم کو ہوا وہ تو ٹوٹ گئی۔ قبل ازیں انہوں نے کہا تھا کہ مریم بیمار ہے، مولانا فضل الرحمن بھی بیمار ہیں، نواز شریف بھی بیمار ہے آصف زرداری بھی بیمار ہیں، یہ سب اقتدار کے بیمار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آصف علی زرداری اور چودھری پرویز الٰہی کے درمیان بالکل حتمی طور پر طے ہو گیا تھا چوہدری صاحب نے کہہ دیا تھا کہ دس بیس لوگ ن لیگ کے بھی لے آؤں گا مگر اس کو سبوتاژ کر دیا گیا۔ ہارون رشید نے مزید کہا کہ آصف علی زرداری بہت بے چین ہیں وہ چاہتے ہیں اسٹیبلشمنٹ سے بھی ورکنگ ریلیشن شپ ہو اور حکومت سے بھی۔ کیونکہ وہ بلاول بھٹو کے وزیراعظم بننے کا خواب دیکھ رہے ہیں۔ واضح رہے کہ یوسف رضا گیلانی کے سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر مقرر ہونے کے بعد ن لیگ پیپلز پارٹی پر الزام عائد کر رہی ہے کہ وہ اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.