ڈیجیٹل اقامہ بنوانا لازمی ہے؟

سعودی عرب: ’کیا غیر ملکیوں کے لیے ڈیجیٹل اقامہ بنوانا لازمی ہے؟“
سعودی محکمہ پاسپورٹ نے وضاحت کی ہے کہ فی الحال غیر ملکیوں کے لیے ڈیجیٹل اقامہ رکھنا لازمی نہیں ہے

ریاض( ۔12 مارچ2021ء) سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں کو اپنی شناخت کی خاطر اپنے ساتھ اقامہ، ڈرائیونگ لائسنس یا استمارہ رکھنا پڑتا ہے کیونکہ کسی بھی مقام پر سیکیورٹی اہلکاروں یا سرکاری اداروں میں اپنا کام کروانے کے لیے ان کی ضرورت پیش آ جاتی ہے۔ کئی بار اگر ان میں سے کوئی بھی دستاویزات ساتھ رکھنا بھول جائیں تو بڑی پریشانی کا سامنا بھی کرنا پڑ جاتا ہے۔ تاہم آئندہ وقتوں کے لیے یہ پریشانی حل کر دی گئی ہے۔ سعودی محکمہ پاسپورٹ (جوازات) نے اقام (ھویہ مقیم) کا ڈیجیٹل ایڈیشن جاری کردیا ہے جو وزارت داخلہ کی ای ایپ ’ابشرافراد‘ پر’ھویہ مقیم الرقمیہ‘ کے نام سے دستیاب ہے۔سعودی عرب میں تمام تر ضروری دستاویزات کی ڈیجیٹلائزیشن کی جا رہی ہے جس کا مقصد غیر قانونی طور پر مقیم غیر ملکیوں کا جلد از جلد پتا چلانا اور انہیں پکڑ کر مملکت سے ڈی پورٹ کرنا ہے۔اسی سلسلے میں سعودی محکمہ پاسپورٹ (جوازات) کی جانب سے ڈیجیٹل اقامہ کی سہولت بھی متعارف کرائی گئی ہے۔ جس سے سیکیورٹی اہلکاروں کو فوری طور پر پتا چل جائے کہ یہ شخص غیر قانونی طور پر مقیم ہے یا قانونی طور پر رہائش پذیر ہے۔ اکثر غیر ملکی جاننا چاہتے ہیں کہ کیا غیر ملکیوں کے لیے ڈیجیٹل اقامہ بنوانا لازمی ہے۔ اس حوالے سے جوازات کی جانب سے وضاحت کی گئی ہے۔ جوازات کے ترجمان کیپٹن ڈاکٹر ناصر العتبی نے بتایا ہے کہ غیر ملکیوں کے لیے فی الحال ڈیجیٹل اقامہ رکھنا لازمی نہیں،اختیاری ہے۔ البتہ ان کے پاس اقامہ کارڈ ہونا ضروری ہے۔ جو غیر ملکی ڈیجیٹل اقامہ حاصل کرنا چاہتے ہیں وہ اسے ابشر کے ذریعے ڈاؤن لوڈ کر سکتے ہیں۔ اگر راستے میں سیکیورٹی اہلکاروں کی جانب سے شناخت طلب کرنے یا کسی ادارے میں ضروری کام ہو تو اقامہ کارڈ دکھانا بھی کافی ہو گا۔اس صورت میں ڈیجیٹل اقامہ طلب نہیں کیا جائے گا۔ تاہم ڈیجیٹل اقامہ کا فائدہ یہ ہے کہ اسے اسمارٹ فونزمیں بھی تصویری شکل میں محفوظ کیا جا سکتا ہے۔ ڈیجیٹل اقامہ کی صورت میں پلاسٹک کارڈ یا اقامہ ہمراہ رکھنے کی ضرورت نہیں ہوگی۔بینکوں، کمپنیوں اور ایک دوسرے کے ساتھ لین دین کے وقت ڈیجیٹل شناخت پر بھروسہ کرسکیں گے۔ کسی بھی فرد یا ادارے یا سیکیورٹی ادارے میں اپنی پہچان کرانے کے لیے گواہ لانے کی ضرورت بھی نہیں ہوگی‘۔موبائل پر ابشر ایپ کے ذریعے ڈاؤن لوڈ کی گئی ڈیجیٹل شناخت کو کسی بھی ذمہ دار کو دکھا کر اپنی شناخت ثابت کی جا سکے گی۔یہ سہولت انٹرنیٹ کے ساتھ اور بغیر دونوں طرح استعمال کی جا سکتی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.