ایک اچھی خبر آ گئی

کورونا سے متاثرہ پاکستانی معیشت کے لیے ایک اچھی خبر آ گئی
امارات میں کاروباری حالات بہتر ہونے سے پاکستانی تارکین کی ترسیلات زر میں اضافہ ہو گیا

دُبئی( 15 مارچ2021ء) کورونا کی ڈیڑھ سال سے جاری وبا نے پاکستانی معیشت کو بھی خاصا نقصان پہنچایا ہے۔ اگرچہ کاروباری سرگرمیاں بحال ہو گئی ہیں تاہم ابھی تک معیشت پُرانے ٹریک پر واپس نہیں آ سکی۔ پاکستانی معیشت کو ایک بہت بڑا دھچکا اس وقت لگا تھا جب امارات اور سعودیہ میں لاک ڈاؤن کے دوران لاکھوں پاکستانیوں کے بے روزگار ہونے سے ترسیلات زر میں خاصی کمی آ گئی تھی۔تاہم اب اچھی خبر یہ ہے کہ امارات میں کاروباری اور معاشی سرگرمیاں خاصی حد تک بحال ہوچکی ہیں۔ جس کے باعث غیر ملکی کارکنان کے حالات بھی بہتر ہو رہے ہیں۔ اسی وجہ سے ایک بار پھر پاکستانیوں نے اپنے وطن بڑی مالیت کی ترسیلات زر بھجوانا شروع کر دی ہیں، جس سے پاکستانی معیشت پر اچھے اثرات مرتب ہوں گے۔خلیج ٹائمز کی ایک خصوصی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سال 2020ء کے دوران لاک ڈاؤن اور ملازمتوں سے فارغ ہونے اور تنخواہوں میں کمی کے باعث تارکین وطن نے بہت کم رقم بھجوائی تھی، تاہم اب ایک بار پھر پاکستانی اور بھارتی تارکین زیادہ سے زیادہ رقم اپنے آبائی وطن بھجوا رہے ہیں۔2020ء میں پاکستانی تارکین کی جانب سے ملک کو بھیجی جانے والی ترسیلات میں 10 سے 15 فیصد تک کی کمی ہو گئی تھی، مگر ایک بار پھر ترسیلات زر کا حجم بڑھ گیا ہے۔ اس کے مقابلے میں دُنیا کے دوسرے ممالک میں ابھی تک ترسیلات زر میں 7 فیصد کمی ریکارڈ کی جا رہی ہے۔ Lulu فنانشل ہولڈنگز کے مینجنگ ڈائریکٹر ادیب احمد نے کہا کہ سال 2021 میں تارکین کی جانب سے اپنے وطن کو بھجوائی جانے والی ترسیلات زر میں بڑا اضافہ دکھائی دے رہا ہے جو امارات میں معاشی سرگرمیوں کی بحالی کو ظاہر کرتا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.