واپس لانے کے لیے اہم اعلان کر دیا

پی آئی اے نے سعودی عرب سے مسافروں کو واپس لانے کے لیے اہم اعلان کر دیا
ترجمان کے مطابق ایک ہفتے میں 9 ہزار سے زائد پاکستانیوں کو واپس لایا جائے گا

ریاض(5فروری2021ء) سعودی عرب میں کورونا کیسز میں اضافے کے بعد پاکستان سمیت 21 ممالک کے شہریوں کے داخلے پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ تاہم سعودیہ سے پاکستان آنے والوں کے لیے پروازوں کا سلسلہ جاری ہے۔ اس حوالے سے پی آئی اے کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ سعودیہ سے روزانہ کی بنیاد پر چار پروازیں پاکستان کے لیے شیڈول کی گئی ہیں اور ایک ہفتے میں توقع کی جارہی ہے کہ پی آئی اے نو ہزار مسافروں کو پاکستان لانے کی سہولت فراہم کرے گی۔

اُردو نیوزسے بات کرتے ہوئے ترجمان پی آئی اے نے بتایا کہ جزوی طور پر عائد پابندیوں کے بعد پہلے روز سعودی عرب سے پاکستان کے لیے چار پروازوں کے ذریعے 1100 سے زائد مسافروں نے سفر کیا۔ترجمان پی آئی اے نے اردو نیوز کو بتایا کہ ’جمعرات کو سعودی عرب کے شہر جدہ، ریاض، دمام اور مدینہ سے ایک ایک پرواز پاکستان کے لیے شیڈول کی گئی تھی جس کے ذریعے 1125مسافروں کو پاکستان لایا گیا ہے۔ کورونا وبا کے پیش نظر غیر ملکیوں کے داخلے پر جزوی طور پر پابندی عائد کرنے کے بعد پی آئی اے نے سعودی عرب سے پاکستان کے لیے یک طرفہ پروازیں بحال رکھنے کا اعلان کیا تھا جبکہ پاکستان سے سعودی عرب کے لیے صرف کارگو پروازیں ہی چلائی جارہی ہیں۔ ان یک طرفہ پروازیں چلانے کا مقصد سعودی عرب میں موجود پاکستانیوں کے لیے سہولت فراہم کرنا ہے، اسی تناظر میں یک طرفہ پروازیں ہونے کے باوجود کرایوں میں اضافہ نہیں کیا گیا۔‘ترجمان کا کہنا تھا کہ ’پاکستان سے سعودی عرب کے لیے فلائٹس کی ٹکٹیں فروخت ہو جاتی ہیں لیکن پابندیوں کے باعث کتنے مسافر سعودی عرب سے پاکستان آنے کے خواہش مند ہوں گے یہ کہنا قبل از وقت ہوگا، تاہم ایک ہفتے میں 9 ہزار مسافروں کو سعودی عرب سے پاکستان لانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔واضح رہے کہ بدھ سے سعودی عرب میں پاکستان سمیت 20 ممالک سے آنے والی پروازوں پر جزوی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ پابندی سے ایک روز قبل قومی ایئر لائن نے سعودی مملکت کے لیے تین پروازیں شیڈول کی تھیں جو کہ 480 مسافروں کو لے کر مملکت گئیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.