ویکسین لگوانے کے بعد فیس ماسک

ویکسین لگوانے کے بعد فیس ماسک پہننے کی ضرورت ہو گی یا نہیں؟ جانیں
دنیا بھر کے مختلف ممالک کی طرح کورونا ویکسین پاکستان میں بھی لگائی جانے لگی ہے، تاہم اس سے متعلق لوگوں کے ذہن میں کئی سوال پیدا ہوتے ہیں، جیسے کورونا کی ویکسین لگوانے کے بعد ماسک پہننا ہوگا یا نہیں؟ احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا ہو گا یا نہیں؟

ان تمام سوالوں کے جواب امریکا کے نیشنل انسٹیٹوٹ آف الرجی اینڈ انفیکشیز ڈیزیز کے ڈائریکٹر ڈاکٹر انتھونی فاؤچی نے دے دیئے ہیں۔ڈاکٹر انتھونی فاؤچی کا کہنا ہے کہ ویکسینیشن کے بعد بھی فیس ماسک کا استعمال ضروری ہوگا اس کی وجہ بیان کرتے ہوئے انہوں نے وائٹ ہاؤس کورونا وائرس کووڈ 19 ریسپانس ٹیم کے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر اپنے پیغام میں کہا کہ ”ابھی ایسا ڈیٹا ناکافی ہے جس سے ثابت ہو کہ ویکسین سے وائرس کا پھیلاؤ روکا جاسکتا ہے”۔انہوں نے مزید لکھا کہ ‘اس وقت ہمارے پاس ڈیٹا ناکافی ہے جس کو دیکھ کر ہم اعتماد سے کہہ سکیں کہ ویکسین سے وائرس کا پھیلاؤ رک سکتا ہے، تو ویکسینیشن کے بعد بھی آپ وائرس کو لوگوں میں پھیلا سکتے ہیں، فیس ماسکس اس وقت تک بہت اہم ہیں جب تک ہم اس بارے میں زیادہ جان نہ لیں اور کیسز میں نمایاں کمی نہ آجائے’۔ڈاکٹر انتھونی کے مطابق جب اولین کووڈ 19 ویکسین تیسرے مرحلے کے ٹرائلز سے گزر رہی تھیں تو اس کو وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے تیار نہیں کیا جارہا تھا بلکہ ان کا مقصد سنگین کیسز اور اموات کی روک تھام تھا۔
اس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ ویکسین کے استعمال کے باوجود لوگ وائرس سے متاثر ہو سکتے ہیں اور بیماری کو آگے پھیلا سکتے ہیں، چاہے ان میں کووڈ 19 کی شدت میں سنگین اضافہ نہ بھی ہو۔تاہم فروری کے آغاز میں آکسفورڈ یونیورسٹی کی ایک ابتدائی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ اُن کی تیار کردہ ویکسین کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں نمایاں کمی لا سکتی ہے تاہم اس تحقیق کے نتائج ابھی کسی طبی جریدے میں شائع نہیں ہوئے اس لئے اس حوالے سے کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہے۔واضح رہے کہ ویکسین کی ایک خوراک کے بعد 2 ہفتے میں اِس فرد میں بیماری سے محفوظ رہنے کا عمل تشکیل پانا شروع ہوتا ہے اور اس دوران کووڈ 19 کا شکار ہونا ممکن ہے اس لئے بہتر ہے کہ ویکسین لگوانے کے بعد بھی فیس ماسک پہنا جائے اور احتیاطی تدابیر پر عمل کیا جائے۔

 

Sharing is caring!

Comments are closed.