احتجاج کرنے والے ملازمین کا مشورہ

آپ اپنے اخراجات کم کریں، شبلی فراز کا احتجاج کرنے والے ملازمین کا مشورہ
اسلام آباد میں احتجاجی ملازمین نے وفاقی وزیر شبلی فراز کی گاڑی روک لی، تنخواہیں بڑھانے کا مطالبہ

اسلام آباد (10 فروری 2021ء) : اسلام آباد کی شاہراہ دستور میدان جنگ بن چکی ہے۔ اسلام آباد میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کے لیے احتجاج کیا جا رہا ہے۔سرکاری ملازمین نے وفاقی وزیر شبلی فراز کی گاڑی روک لی۔شبلی فراز نے مظاہرین سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو آپ کی مشکلات کا احساس ہے،آپ اپنے اخرجات کم کریں۔شبلی فراز نے مزید کہا کہ ہم آنے والے بجٹ میں آپکی تنخواہیں بڑھائیں گے۔سرکاری ملازمین نے کہا کہ ہماری تنخواہیں 23 ہزار ہے، کتنے اخرجات کم کریں۔آنے والے بجٹ تک ہمیں مہنگائی مار دے گی۔۔واضح رہے کہ اسلام آباد کی شاہراہ دستور میدان جنگ بن گئی۔سرکاری ملازمین اور پولیس آمنے سامنے آ گئے ہیں۔ڈی چوک کی جانب مارچ پر پولیس ان ایکشن ہے۔مظاہرین پر واٹرگن اور آنسو گیس کی شیلنگ شروع کر دی ہے۔درجنوں افراد گرفتار کر لیے گئے ہیں۔پولیس نے دھرنے کے 7 قائدین کو حراست میں لے لیا ہے۔گرفتار افراد میں چیف آرگنائز آل پاکستان ایمپلائز گرینڈ الائنس رحمان باجوہ بھی شامل ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ وفاقی ملازمین کی جانب سے پولیس پر پتھراؤ بھی کیا جا رہا ہے۔پولیس شیلنگ اور لاٹھی چارج سے متعدد سرکاری ملازمین زخمی ہو گئے ہیں۔ مظاہرین نے پاک سیکرٹریٹ کے مرکزی گیٹ کو تالے لگا دئیے ہیں۔ریڈزون میں پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے۔سرکاری ملازمین نے آج پارلیمنٹ کے سامنے دھرنا دینے کی کال دے رکھی ہے۔بتایا گیا ہے کہ پاک سیکرٹریٹ میں اس وقت صورتحال کشیدہ ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.