پاکستان مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے مرکزی نائب صدر

میرپورپاکستان مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے مرکزی نائب صدر ارشد محمود غازی ممبر مرکزی مجلس عاملہ نعمت شہزاد ممبر مرکزی مجلس عاملہ راجہ محمد اعظم خان، ممبرمرکزی مجلس عاملہ شیراز غازی ممبرمرکزی مجلس عاملہ طارق محمود زرگر، سینئر نائب

صدر ایل اے تھری خلیل احمد رحمانی، سیکرٹری جنرل ایل اے تھری اشتیاق مغل، ایڈیشنل سیکرٹری جنرل یاسین لعل اور دیگر نے اپنے مشترکہ بیان سابق وزیراعظم سردار سکندر حیات خان کے بیان کی پرزور مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سردار سکندر حیات خان کو اپنے مقام اور مرتبے کا خیال کرنا چاہئے تھا اور بازاری زبان استعمال نہیں کرنی چاہئے تھی۔ میاں محمد نواز شریف ایک بڑے صنعت کار گھرانے میں پیدا ہوئے پہلی سربراہی کانفرنس میں حکومت پاکستان کے ایسی بڑی گاڑی میسر نہ تھی کہو ہ سربراہان مملکتوں ائرپورٹ سے ان کی رہائش گاہوں تک پہنچا سکیں تو میاں محمد نوازشریف جو ایک نوجوان طالبعلم تھے ان کی گاڑی چھین کر استقبال کیلئے استعمال کی گئی۔ سردار سکندر حیات جس گاڑی کی بات کر رہے ہیں وہ تین گنازاہد قیمت پرمیاں محمد نوازشریف کو فروخت کی گئی جس کا ثبوت آج بھی موجود ہے۔ سردار سکندر حیات جس شخص کے ساتھ جنت میں جانے سے انکاری تھے آج اسی کی سرپرستی کرنے پر فخر کرتے ہیں اور جن کے بارہ میں ناقابل اصلاح ہونے کا کہا کرتے تھے آج فخر سے سرپرستی فرما رہے ہیں میاں محمد نوازشریف کے دستر خواں کی وسعت کا سارا زمانہ معترف ہے سردار صاحب نے پکوڑں کی بات کر کے اپنے ہی قد کو چھوٹا کیا ہے جو کسی بھی لحاظ سے ان کو زیب نہیں دیتا۔ محترمہ کلثوم نواز کے حوالہ سے گفتگو کرکے وہ پتہ نہیں کیا تاثر دینا چاہتے ہیں کل سردار عبدالقیوم خان اور سردار عتیق احمد خان کے حوالہ سے جو گفتگو کرتے تھے سارا زمانہ واقف ہے سردار صاحب کو چاہئے کہ وہ سیاست ضرور کریں یہ ان کا حق ہے مگر ال فول بنانات سے پرہیز کریں۔ ان کی اپنی ذات کے حوالہ سے بھی کافی مواد موجود ہے۔ لیکن مسلم لیگ ن اپنے بزرگوں کی کردار کشی کی روایات نہیں رکھتی۔ بزرگوں کو بیھ چاہئے کہ وہ اپنے مقام اور مرتبے کاخیال کریں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.