ناراض اراکین کے حوالے سے دوٹوک اعلان کر دیا

سینیٹ الیکشن سے قبل (ن)لیگ کا بڑا فیصلہ! ناراض اراکین کے حوالے سے دوٹوک اعلان کر دیا

ڈسکہ (نیوز ڈیسک ) پاکستان مسلم لیگ ن نے سینیٹ انتخابات کے لیے ناراض اراکین سے ووٹ نہ مانگنے کا فیصلہ کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ جو اراکین پارٹی قیادت سے ناراض ہیں انہیں ہم پارٹی سے نکال چکے ، اس لیے سینیٹ الیکشن میں ان سے ووٹ بھی نہیں مانگیں گے ، کیوں کہ ناراض اراکین سے ووٹ مانگنے کا کوئی فائدہ نہیں ہے  ڈسکہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سابق وزیر قانون پنجاب نے کہا کہ ناراض ارکان نے ووٹ دینے کا کہا ہے جب کہ پی ٹی آئی کے بہت سے ناراض اراکین بھی ووٹ دینے کیلئے ہم سے رابطہ کر رہے ہیں لیکن ہم ناراض ارکان سے ووٹ نہیں مانگیں گے تاہم اس کی بنیاد پر سینیٹ الیکشن میں اپ سیٹ ہوسکتا ہے۔  رانا ثناء اللہ نے کہا کہ گیس، بجلی چوروں کے خلاف عوام آج ووٹ دیں گے، لوگ باہر نکلیں اور ووٹ ڈالیں ، ووٹرز کو تحفظ فراہم کرنا ہماری ذمہ داری ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ حکومتی غنڈوں نے ڈسکہ میں ایک پولنگ سٹیشن پر فائرنگ کی ، کیون کہ پی ٹی آئی کی کوشش ہے کہ ٹرن آوٹ کم ہو لیکن ہمارے کارکنان کے آنے پر حکومتی جماعت کے غنڈے چلے گئے۔ ن لیگی رہنما نے کہا کہ پی ٹی آئی کے پولنگ سٹیشن ویران پڑے ہیں ، ہر طرف شیر کی آواز آ رہی ہے ، اس صورتحال میں ہرووٹ کو پرامن طریقے سے کاسٹ کرانا ہماری ذمہ داری ہے ، کیوں کہ ضمنی الیکشن کا نتیجہ عوام کی رائے ہو گا ، موجودہ حکومت نے ملک کوتباہی کے دہانے پر لاکھڑا کردیا ، اس لیے عوام پی ٹی آئی کے خلاف اپنی رائے کا آزادانہ استعمال کریں ، ووٹرز کو گمراہ کرنے کے لیے افواہیں پھیلائی جارہی ہیں لیکن اس کے باوجود سلیکٹڈ ٹولے کے خلاف عوام ووٹ دیں گے ، جو 5 بجے تک ووٹ نہ ڈال سکیں وہ پولنگ سٹیشن کے اندر رہیں ، پولنگ سٹیشن میں موجود افراد 8 بجے تک ووٹ ڈال سکتے ہیں۔

 

Sharing is caring!

Comments are closed.