مجھے تو پیسے دے دیئے ، اب میرے ڈرائیور کو بھی دو۔

’’ مجھے تو پیسے دے دیئے ، اب میرے ڈرائیور کو بھی دو۔۔۔‘‘ نامور خاتون سیاستدان نے کروڑوں روپے لے کر اپنے ڈرائیور کو کتنے پیسے دلوائے؟ ایک اور پنڈورا باکس کھل گیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئر صحافی و تجزیہ کار محسن بیگ نے کہا کہ سینیٹ انتخابات میں خرید و فروخت کی کُل 20 ویڈیوز تھیں۔ 15 ویڈیوز لیپ ٹاپ کی ایک فائل میں جبکہ پانچ دوسری فائل میں تھیں، وہ نہیں کُھلیں ۔ عمران خان کو یہ ویڈیوز دکھائی گئی تھیں۔ جس کے بعد ایک انہوں نے ایک پریس کانفرنس کی تھی، انہوں نے ویڈیوز دیکھ کر اُن بیس رہنماؤں کو نکالا تھا ، اب اگر عمران خان یہ کہیں کہ میں نے ویڈیوز نہیں دیکھی تھیں تو مجھے نہیں معلوم کہ کون سچ بول رہا ہے۔ محسن بیگ نے کہا کہ بنیادی چیز یہ ہے کہ اُس وقت بھی ان کو معلوم تھا کہ یہ ویڈیوز کس نے بنوائی ہیں اور یہ پیسے کس نے دئے ہیں لیکن اب اگر مصلحتاً اُس شخص کا نام نہیں لیا جا رہا تو وہ اور بات ہے لیکن سب کچھ ان کے علم میں تھا۔محسن بیگ نے کہا کہ ہم سب یہی چاہتے ہیں کہ سینیٹ انتخابات میں پیسے نہیں چلنے چاہئیں ۔ محسن بیگ نے بتایا کہ جب پاکستان تحریک انصاف کے لوگوں نے بکنا شروع کیا تو ہر ایک نے فار سیل کا ٹیگ لگایا ہوا تھا ، ہر کوئی اپنی بولی لگا رہا تھا۔اُس وقت ان کو بھی احساس ہوا کہ ہم بھی کچھ لوگوں کو فنڈز دیکھ کر روکیں۔ اس کے بعد انہوں نے فنڈز جاری کیے۔ اسی دوران پنجاب میں ان کی 30 سیٹیں تھیں جہاں سے ان کے ایک سینیٹر منتخب ہوئے جس نے 46 یا 47 ووٹ لیے تھے، اُس وقت وہ غلط تھا یا صحیح تھا۔ وزیراعظم کا ایک دم کہہ دینا کہ یہ ویڈیو جاری کر دی ، اس کا صرف ایک ہی مطلب ہے کہ ان کو خطرہ ہے کہ کوئی رہنما خفیہ کام نہ کر جائے۔محسن بیگ نے کہا کہ میں کافی دیر سے کہہ رہا ہوں کہ اسٹیبلشمنٹ جتنا مرضی زور لگا لے ، عمران خان کو ان سینیٹ انتخابات میں سرپرائز ملے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایک خاتون تھیں کہ جنہیں 3 کروڑ روپے ملے وہ تین کروڑ روپے گن رہی تھی اور انہوں نے کہا کہ دس لاکھ روپے اور دے دیں اور پھر آخر میں انہوں نے کہا کہ میرے ڈرائیور کو بھی پیسے دے دیں۔ محسن بیگ نے مزید کیا کہا آپ بھی دیکھیں:

Sharing is caring!

Comments are closed.