خان نے جاسوس چھوڑے

اسمبلی میں 12 اراکین پر شک ہے اسی لیے عمران خان نے جاسوس چھوڑے
سینئیر صحافی و تجزیہ کار مظہر عباس نے دعویٰ کر دیا

اسلام آباد ( 24 فروری 2021ء) : نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی و تجزیہ کار مظہر عباس نے کہا کہ صورتحال یہ ہے کہ یہ اسٹیٹ کی لڑائی ہے۔ اگر زرداری صاحب یہ لڑائی ہار گئے تو ان کا پورا بیانیہ ناکام ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگر یوسف رضا گیلانی جیت گئے تو سب کے سامنے یہ عمران خان کے خلاف ایک عدم اعتماد ہو گا۔ اسی لیے کیونکہ اس میں صرف قومی اسمبلی کے اراکین ووٹ دیں گے تو اگر قومی اسمبلی اراکین کی اکثریت حفیظ شیخ کے خلاف ووٹ دے دیتی ہے تو اس میں پھر عمران خان کے لیے کوئی اور آپشن نہیں ہو گی سوائے اس کے کہ وہ اعتماد کا ووٹ دوبارہ لیں یا پھر نئے انتخابات کی طرف جائیں۔ مظہر عباس نے کہا کہ سینیٹ انتخابات سے متعلق وزیراعظم عمران خان کی باتوں سے ایک چیز واضح ہے کہ پرابلم ہے، اگر سیکرٹ بیلٹ ہوتا ہے تو مسئلہ ہو گا۔ اسی لیے عمران خان ذاتی طور پر اُن ایم این ایز اور ایم پی ایز سے مل رہے ہیں جن سے وہ نہیں ملے تھے۔ جہانگیر ترین کا متحرک ہونا بھی ایک نشانی ہے ۔ ایم کیو ایم کے ساتھ اُن کو مسائل ہیں۔ سندھ میں حکومت کے تینوں اتحادیوں کے ساتھ مسائل ہیں، عین ممکن ہے کہ سندھ سے پیپلز پارٹی کی جو چھ سیٹیں بنتی ہیں وہ آٹھ ہو جائیں۔ مظہر عباس نے کہا کہ قومی اسمبلی میں جو اراکین ہیں ان میں سے 11 سے 12 اراکین ہیں جن پر شکوک و شُبہات ہیں ، یہی وجہ ہے کہ عمران خان نے جاسوس چھوڑے ہوئے ہیں۔ انہیں سیکرٹ بیلٹ پر تحفظات اسی لیے ہیں کیونکہ ان کو لگتا ہے کہ کچھ ہو سکتا ہے، اگر سیکرٹ بیلٹ ہوا تو پھر کچھ بھی ہو سکتا ہے ۔ تجزیہ کار مظہر عباس نے کہا کہ سینیٹ الیکشن میں اس وقت جس جماعت میں زیادہ بے چینی پائی جا رہی ہے وہ پی ٹی آئی ہے۔ انہوں نے مزید کیا کہا آپ بھی دیکھیں:

Sharing is caring!

Comments are closed.