معاشی ماہرین کے مطابق پاکستانی کرنسی

’عنقریب پاکستانیوں کو ایک اماراتی درہم کے بدلے میں 40 روپے ملیں گے“ معاشی ماہرین کے مطابق پاکستانی کرنسی کی ویلیو میں اضافہ ہو رہا ہے ، اگر ایسا ہوا تو اماراتی درہم کی قدر پاکستانی روپے کے مقابلے میں کم ہو سکتی ہے

دُبئی(30 نومبر2020ء) پاکستان اور امارات میں مقیم معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ اس وقت ایک اماراتی درہم کے بدلے میں پاکستانی کرنسی کی قدر 43 روپے کے لگ بھگ ہے تاہم گزشتہ کچھ ہفتوں کے دوران پاکستانی کرنسی کی قدر میں اضافہ ہو رہا ہے۔ اگر مستقبل میں بھی بہتری کا یہ رحجان جاری رہا تو پاکستانیوں کوفی درہم کے عوض 40 روپے ملیں گے۔ تاہم اس کے لیے یہ دیکھنا ہو گا کہ پاکستانی حکومت کرنٹ اکاؤنٹس کی تعداد سے متعلق کیا فیصلے کرتی ہے۔ فی الحال ایک اماراتی درہم کے بدلے پاکستانیوں کو 43 روپے مل رہے ہیں ،جبکہ امریکی ڈالی کی ویلیو 160 روپے تک نیچے آ گئی ہے۔ معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ 26 اگست 2020ء سے پہلے پاکستانی کرنسی کی قدر تیزی سے گر رہی تھی، تاہم اس کے بعد سے لے کر 17 نومبر تک پاکستانی کرنسی کچھ سنبھل گئی ہے ۔پاکستانی کرنسی کی ویلیو میں 6.5 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ جس کے باعث وہی ایک اماراتی درہم جس کے بدلے میں پاکستانیوں کو 45.8 روپے مل رہے تھے، اب اس کے عوض 43.34 روپے حاصل ہو رہے ہیں۔ اگر پاکستانی کرنسی کی قدر میں ایک بار پھر گراوٹ نہ آئی تو اماراتی درہم کی قدر 40 روپے تک آ سکتی ہے۔ دُبئی کے اورینٹ ایکسچینج کے چیف ایگزیٹو آفیسر راجیو راپن چولیا کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے دوران پابندیوں کی وجہ پاکستان کی درآمدات گھٹ گئیں، جس کی وجہ سے امریکی ڈالر بہت کم مالیت میں پاکستان سے باہر گیا ہے ۔

Sharing is caring!

Comments are closed.