سعودی عرب میں بھی ”ڈبل شاہ“ پکڑ ا گیا

سعودی عرب میں بھی ”ڈبل شاہ“ پکڑ ا گیا
دھو-کے باز نوجوان رقم دُگنی کرنے کا لالچ دے کر 350 ملین ریال اور 20 شاندار گاڑیوں کا مالک بن چکا تھا

جدہ 2020ء) گزشتہ دہائی کے دوران پاکستان میں ایک شخص ہزاروں افراد کی رقم دُگنی کرنے کا جھانسہ دے کر ان سے اربوں روپیہ لوٹ چُکا تھا، جسے ڈبل شاہ کا نام دیا گیا۔ یہ شخص لوگوں کو ایک ماہ کے اندر ان کی دی گئی رقم دُگنی کرکے واپس کرنے کا وعدہ کرتا تھا۔ شروع شروع میں اس شخص نے لوگوں کودُگنی رقم دے کر اپنا اعتبار قائم کر لیا، جس کے بعد اس کا د-ھوکا دہی کا کاروبار چل نکلا۔ تاہم بعد میں یہ شخص قانون کی گرفت میں آ گیا ۔ سعودی عرب میں بھی ایک ایسا ہی ڈبل شاہ پکڑا گیا ہے۔ جو لوگوں کو راتوں رات مالدار بننے کے سبز باغ دکھا کر انہیں لوٹ رہا تھا۔ سعودی میڈیا کے مطابق نوجوان نے 10 لاکھ ریال کرائے سے عالیشان دفتر کھولا۔ سادہ لوح شہریوں سے ای بزنس، انٹرنیشنل شیئرز مارکیٹ اور بیرون مملکت کمپیوٹر پروگرام کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کرائی اور دیکھتے ہی دیکھتے 350 ملین ریال اور 20 لگڑری کاروں کا مالک بن گیا تھا۔ اس کے ساتھ ایک شامی اور تین سعودی شریک تھی-متاثرین کی شکایتوں پر نوجوان کو جیل بھیج دیا گیا تھا۔ جدہ فوجداری کی عدالت نے اسے منی لانڈرنگ اور دھوکہ دہی کا مجرم قرار دے دیا تھا۔شاطر نوجوان نے اس فیصلے کے خلاف اپیل کورٹ سے رجوع کیا تو وہاں سے بھی سابقہ عدالتی فیصلے کی توثیق کردی گئی۔مجرم کے خلاف مزید 4 عدالتوں میں مقدمات چل رہے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ یہ نوجوان کورنیش جدہ کے ایک ٹاور میں دس لاکھ ریال کرائے کا شاندار دفتر کھولے ہوئے تھا۔ اس کے پاس 20 سے زیادہ لگڑری گاڑیاں ہیں جن کی مجموعی قیمت 40 ملین ریال سے زیادہ کی ہے۔اس کے پینل پر ممتاز وکیل، ایڈوائزر، اکاوٴنٹنٹ اور دفتری امور کے ماہرین ہیں۔ وہ یومیہ 15 ہزار اور ماہانہ ساڑھے چار لاکھ ریال لے کر سادہ لوح عوام سے فرضی منصوبوں میں سرمایہ کاری کرا رہا تھا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.