متحدہ عرب امارات میں مقیم شادی شدہ پاکستانیوں کے لیے شاندار خبر

متحدہ عرب امارات میں مقیم شادی شدہ پاکستانیوں کے لیے شاندار خبر

ٰنجی شعبے کے مرد ملازمین کو بھی بچے کی پیدائش پر پانچ روز کی چھُٹی دی جائے گی
دُبئی متحدہ عرب امارات اپنی انسان دوست پالیسیو اور روزگار کے بہترین مواقع کی فراہمی کے باعث دُنیا بھر کے تارکین کے لیے جنت کا درجہ رکھتی ہے۔ یہاں پر مقیم تارکین کو بھی مقامی افراد کی طرح بھرپور حقوق حاصل ہیں اور انہیں آہستہ آہستہ اور زیادہ حقوق دیئے جار ہے ہیں۔ اماراتی حکومت نے مملکت میں بسنے والے نجی شعبے کے مقامی اور تارک وطن ملازمین کو خوشخبری سُنا دی ہے کہ اب مردملازمین کوبچّے کی پیدائش پر پانچ دن کی رخصت ملے گی۔ اماراتی حکومت نے نجی شعبے سے تعلق رکھنے والے مردملازمیں کو بچّے کی پیدائش پر پہلی مرتبہ باتن خواہ پانچ دن کی چھٹی دینے کا اعلان کیا ہے۔یو اے ای کے صدر شیخ خلیفہ بن زاید آل نہیان نے اس ضمن میں لیبر قانون میں ترامیم کی منظوری دے دی ہے۔ ان کے تحت نجی شعبے کے مرد ملازمین اب اپنے گھر میں بچے کی پیدائش کے وقت با تن خواہ پانچ دن کی رخصت لے سکیں گے۔
اس قانون کے تحت انھیں مزید یہ رعایت دی گئی ہے کہ وہ بچے کی تاریخِ پیدائش سے چھے ماہ کے اندر کسی بھی وقت دفتر سے یہ رخصت لے سکتے ہیں۔اس وقت نجی شعبے میں کام کرنے والی صرف خواتین کو45 دن کی تولیدی رخصت دی جاتی ہے۔یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق نجی شعبے میں کام کرنے والے مرد حضرات کے مفاد میں یہ تازہ اقدام کیا گیا ہے اور یو اے ای عرب دنیا میں نجی شعبے کے کسی ملازم کو بچے کے جنم پر رخصت دینے والا پہلا عرب ملک بن گیا ہے۔نئے صدارتی فرمان کا مقصد خاندان کو مستحکم اور مضبوط بنانا اور یو اے ای کی صنفی مسابقت کے شعبے میں پوزیشن کو بہتر بنانا ہے۔ نیز نوجوان ٹیلنٹ کی نجی شعبے میں کام کے لیے حوصلہ افزائی کرنا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.