وزیراعظم کا پناہ گاہ کا دورہ، وہاں مقیم افراد کے ساتھ کھانا کھایا

وزیراعظم کا پناہ گاہ کا دورہ، وہاں مقیم افراد کے ساتھ کھانا کھایا

3 ماہ میں اسلام آباد کی تمام پناہ گاہوں کو ری ماڈل کردیں گے، بتدریج ملک بھر کی پناہ گاہوں کو ری ماڈل کیا جائے گا، پناہ گاہوں میں لوگوں کو بہترین سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ وزیراعظم عمران خان کا ترلائی میں اپ گریڈ پناہ گاہ کا دورہ
اسلام آباد وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آئندہ 3 ماہ میں اسلام آباد کی تمام پناہ گاہوں کو ری ماڈل کردیں گے، بتدریج پورے ملک میں پناہ گاہوں کو ری ماڈل کیا جائے گا، پناہ گاہوں میں لوگوں کو بہترین سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ترلائی میں اپ گریڈ پناہ گاہ کا دورہ کیا۔ وزیراعظم پناہ گاہوں میں مختلف سہولیات اور انفراسٹرکچر کا جائزہ لیا۔ عمران خان نے پناہ گاہوں میں موجود افراد سے بات چیت کی اور ان سے سہولیات سے متعلق دریافت کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے پناہ گاہوں میں مقیم افراد کے ساتھ کھانا بھی کھایا۔ اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آئندہ 3 ماہ میں اسلام آباد کی تمام 5 پناہ گاہوں کو ری ماڈل کردیں گے۔ اس کے ساتھ ہی پورے ملک میں پناہ گاہوں کو ری ماڈل کیا جائے گا۔اس سے قبل وزیراعظم سے مشیر پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے ملاقات کی جس میں ملکی تازہ سیاسی صورت حال اور قانونی امور پر مشاورت اور کراچی ٹرانسفارمیشن پیکج سمیت پارلیمانی معاملات پر گفتگو کی گئی ۔مشیر پارلیمانی امور نے کہاکہ کراچی کیلئے 1ہزار113ارب روپے کے تاریخی پیکج کا اعلان خوش آئند ہے، وفاقی حکومت نے معاشی حب کی بہتری کیلئے بروقت قدم اٹھایا۔
ورزیر اعظم نے کہا کہ سیاسی بد انتظامیوں کے باعث کراچی کے حالات بد ترین ہوئے، وزیراعظم نے کہاکہ کراچی کی ترقی وفاقی حکومت کے ایجنڈے میں شامل ہے، وفاق کراچی کے مسائل کے حل کیلئے مالی وسائل فراہم کرے گا، ٹرانسفارمیشن پیکج کے تحت منصوبوں پر جلد عملدرآمد ضروری ہے۔ملاقات کے دوران فیٹف سے متعلقہ قانون سازی پر بھی گفتگو کی گئی ۔وزیراعظم نے ایک بار پھر قانون سازی کا عمل جلد مکمل کرنے کے عزم کاا ظہار کیا ۔بابر اعوان نے قومی اسمبلی اور سینیٹ اجلاس سے متعلق آگاہ کیا۔ بابر اعوان نے کہاکہ ملکی سلامتی سے متعلق قانون سازی میں تاخیر نہیں ہونے دیں گے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.