ابوظبی میں داخل ہونے والوں کے لیے اہم اعلان کر دیا گیا

ابوظبی میں داخل ہونے والوں کے لیے اہم اعلان کر دیا گیا

DPI ٹیسٹ سے پہلے PCR ٹیسٹ کی شرط ختم، دونوں میں سے کوئی ایک ٹیسٹ کروا کا ابوظبی جا سکتے ہیں
ابوظبی ابوظبی کی حکومت نے کچھ روز قبل ریاست میں داخلے کے لیے کورونا سے متعلق دو ٹیسٹ کروانے لازمی قرار دے دیئے تھے جس کا مقصد کورونا کے پھیلاؤ کو ممکنہ حد تک روکنا تھا، تاہم مسافروں کو پیش آنے والی مشکلات کے تحت یہ فیصلہ واپس لے لیا گیا ہے۔ نیشنل ایمرجنسی اینڈ کرائسزمینجمنٹ اتھارٹی (NECMA)کی جانب سے ٹویٹر پیغام میں کہا گیا ہے کہ ابوظبی میں داخل ہونے والے افراد کے لیے آج سے شرائط نرم کر دی گئی ہیں۔اب لوگوں کو ابوظبی آنے کے لیے ڈی پی آئی ٹیسٹ سے قبل پی سی آر ٹیسٹ کروانے کی ضرورت نہیں ہو گی۔ کوئی بھی شخص PCR یا DPI ٹیسٹ دونوں میں سے کوئی ایک ٹیسٹ کروا کر اس کی نیگیٹو رپورٹ آنے کی صورت میں ابوظبی آ سکتا ہے۔تاہم ڈی پی آئی ٹیسٹ کی رپورٹ حاصل کیے 48 گھنٹے سے زائد وقت نہ گزرا ہو۔
اگر کوئی شخص ابوظبی میں آتا ہے اور یہاں پر چھ روز یا اس سے زائد قیام کرتاہے تو ایسی صورت میں اسے اپنے قیام کے چھٹے روز پی سی آر ٹیسٹ کروانا لازمی ہو گا۔ اس حوالے سے NEMC کا کہنا ہے کہ چھٹے روز پی سی آر ٹیسٹ کروانے کی شرط اس لیے عائد کی گئی ہے تاکہ ریاست میں کورونا کے پھیلاؤ کی روک تھام موثر انداز سے ہو سکے۔ واضح رہے کہ امارات میں ریپڈ لیزر ٹیسٹ کروانے پر 50 درہم وصول کیے جا رہے ہیں جبکہ PCR ٹیسٹ کروانے پر 370 درہم ادا کرنا ہوتے ہیں۔ ابوظبی حکومت نے کورونا وائرس کی وبا کے دوران ریاست میں داخل ہونے والوں پر کورونا ٹیسٹ کروانے کی پابندی عائد کر دی تھی۔ 2 جون کو عائدہونے والی اس پابندی کو اب تین ماہ سے زائد عرصہ گزر چکا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.