مسلم کانفرنس کو تحریک پی ٹی آئی آزادکشمیر میں ضم کرنے کی خبروں پر مسلم کانفرنس کا موقف سامنے آگیا

مسلم کانفرنس کو تحریک پی ٹی آئی آزادکشمیر میں ضم کرنے کی خبروں پر مسلم کانفرنس کا موقف سامنے آگیا

اسلام آباد (سید عامر گردیزی ) کل سے سوشل میڈیا پر آزادکشمیر کے آمدہ انتخابات کے حوالے سے ریاستی جماعت مسلم کونفرنس کو تحریک انصاف میں‌ ضم کرنے کی خبریں‌گردش کر رہی ہیں‌-
سوشل میڈیا پر وائرل خبر کے مطابق آزاد کشمیر میں تحریک انصاف کی جماعتی کارکردگی سے مایوسی کے بعد عمران خان اور ان کی ٹیم کی طرف سے آمدہ انتخابات کے لیے نئ حکمت عملی پر غور شروع کر دیا گیا ہے. جس میں مسلم کانفرنس کو سردار عتیق تحریک انصاف میں اس وقت ضم کریں گے جب ان کو اس بات کی یقین دہانی کروائی جائے گی کہ ان کو تحریک انصاف کی صدارت ملے گی۔ خبر میں‌یہ بھی کہا گیا ہے کہ گذشتہ عرصے میں دونوں طرف سے ہونے والی پس پردہ ملاقاتوں میں اس حکمت عملی کو ترتیب دینے کے لیے دونوں اطراف سے 6 افراد پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دینے کی اطلاعات ہیں۔
اس معاملے کو دیکھنے کے لیے قائم کردہ کمیٹی میں‌تحریک انصاف سے شاہ محمود قریشی’اسد عمر اور فواد چوہدری جبکہ مسلم کانفرنس سے ملک نواز’ صغیر چغتائ اور عثمان عتیق کے نام شامل ہیں۔
دوسری طرف اس خبر میں‌مسلم کانفرنس کو تحریک انصاف میں‌ضم کرنے کی جو وجہ بتائی گئی ہے اس کے مطابق سردارعتیق نے آمدہ الیکشن میں مسلم کانفرنس کو لبریشن لیگ بننے سے بچانے کے لیے اس خواہش کا اظہار کیا ہےاور حکمت عملی کے نتیجے میں تحریک انصاف کی صدارت اور سیکرٹری جنرل کی تبدیلی کے امکانات بڑھ گے ہیں۔ اس خبر کے تناظر میں‌سٹیٹ ویوز نے مرکزی چیئر مین آل جموں‌ کشمیر مسلم کانفرنس یوتھ ونگ سردار عثمان عتیق سے رابطہ کیا اور ان سے اس خبر پر موقف لینا چاہا تو ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی آزادکشمیر کی قیادت آزادکشمیر بھر میں آمدہ الیکشن کو لیکر ‌دورے کررہی ہے اور مسلم کانفرنس مسلم کانفرنس یوتھ ونگ کے پلیٹ فارم سے آزادکشمیر میں‌دوروں‌کیساتھ ساتھ 06ستمبر کو اٹھمقام میں‌ یوم دفاع پاکستان کنونشن کا بھی انعقاد کر رہی ہے – سردار عثمان عتیق کا مزید کہنا تھا کہ مسلم کانفرنس ریاست کی بانی جماعت ہے. اس حوالے سے یہ کہنا کہ اسے کسی اور سیاسی جماعت میں‌ضم کر دیا جائے بالکل ایسا ہی ہے جیسے پاکستان کی بانی جماعت مسلم لیگ کو کسی دوسری سیاسی جماعت میں‌ضم کر دیا جائے -مسلم کانفرنس کو کسی دوسری سیاسی جماعت میں‌ضم کرنا اگلے 100 سال میں‌بھی ممکن نہیں‌ہے .کیونکہ اس کا اپنا ایک تخشص ہے اورنظریہ ہے جس کا تعلق براہ راست مسئلہ کشمیر سے جڑا ہے -اس لیے ایسا سوچنا بھی ممکن نہیں‌ہے-

Sharing is caring!

Comments are closed.