متحدہ عرب امارات میں مقیم کلمہ گو افراد کو خوش خبری

متحدہ عرب امارات میں مقیم کلمہ گو افراد کو خوش خبری

لیبر کیمپوں اور صنعتی علاقوں کی تمام مساجد کھول دی گئیں
دُبئ متحدہ عرب امارات میں کورونا وائرس کی وبا کے باعث کئی ماہ سے بند پڑی مساجد کھولنے کا اعلان ہو گیا ہے۔ خلیج ٹائمز کے مطابق مملکت کے تمام صنعتی علاقوں اور لیبر کیمپس میں کورونا کے باعث بند کی گئی مساجد کھول دی گئی ہیں۔ نیشنل ایمرجنسی کرائسز اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (NECMA)کی جانب سے اطلاع دی گئی ہے کہ امارات کے لیبر کیمپس اور انڈسٹریل علاقوں میں تمام مساجد اور دیگر مذاہب کی عبادت گاہیں کھولی جا رہی ہیں۔ تاہم پہلے مرحلے میں مساجد اور عبادت گاہوں میں آنے والوں کی تعداد محدود رکھی جائے گی۔ فی الحال مساجد کے احاطے میں سماجی فاصلے کی پابندی کے پیش نظر صرف 30 فیصد افراد عبادت کر سکیں گے۔اگلے مرحلے میں زیادہ افراد کو عبادت کی اجازت ہو گی۔

NCEMA کی جانب سے ٹویٹر اکاؤنٹ پر اعلان کیا گیا ہے کہ نیشنل ایمرجنسی کرائسز اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی اور امارات کی جنرل اتھارٹی برائے اسلامی امور و زکوٰة نے آپسی صلاح مشورے کے بعد یہ فیصلہ کیا ہے کہ لیبر کیمپوں اور انڈسٹریل ایریاز میں قائم تمام مساجد اور دیگر عبادت گاہیں کھول دی جائیں۔ ابتدائی مرحلے میں تمام عبادت گاہوں میں لوگوں کی تعداد کواصل گنجائش کے 30 فیصد تک محدود رکھا جائے گا۔ مساجد کے عملے اور نمازیوں کو کورونا سے متعلق تمام احتیاطی تدابیر و ضوابط کی مکمل پاسداری کرنا ہو گی۔ مساجد میں داخلے کے وقت سے لے کر باہر نکلنے تک ماسک پہنے رکھنا لازمی ہو گا۔ تمام نمازی ایک دوسرے سے تین میٹر کا فاصلہ رکھیں گے۔ آپس میں ہاتھ ملانے یا گروپ کی صورت میں اکٹھے ہونے سے باز رہنا ہو گا۔ مسجد میں داخلے اور باہر نکلتے وقت ہاتھوں کو اچھی طرح سینیٹائز کرنا بھی لازمی ہو گا۔تمام نمازی اپنی جائے نماز گھر سے ہی لائیں گے۔ مسجد میں موجود قرآن شریف کے پرنٹ شدہ نسخے پڑھنے کی اجازت نہیں ہو گی بلکہ اپنے پاس موجود الیکٹرانک ڈیوائسز پر ہی قرآن شریف کی تلاوت کی جائے گی۔ نمازیوں کے لیے سمارٹ فونز پر AlHosn ایپ ڈاؤن لوڈکرنا بھی لازم ہو گی۔ واضح رہے کہ امارات میں 3 اگست کو مساجد 50 فیصد گنجائش کی شرط کے ساتھ کھول دی گئی تھیں، تاہم انڈسٹریل ایریاز اور لیبر کیمپس جہاں زیادہ تر تارکین آباد ہیں، وہاں پر زیادہ کورونا کیسز ہونے کے باعث ان کی عبادت گاہوں کو بند رکھا گیا تھا۔ جنہیں اب محدود گنجائش کی شرط کے ساتھ کھول دیا گیا ہے۔ امارات میں فی الحال مساجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی کی اجازت نہیں دی گئی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.