سعودی عرب میں جعلی اقاموں کے کاروبار پر 4 پاکستانی گرفتار

سعودی عرب میں جعلی اقاموں کے کاروبار پر 4 پاکستانی گرفتار

ریاض میں مقیم پاکستانیوں کے قبضے سے سینکڑوں جعلی اقامے بھی برآمد ہوئے
ریاض سعودی عرب میں مقیم 4 پاکستانیوں کے گینگ کو پولیس نے جعلی اقاموں کے کاروبار پر گرفتار کر لیا ہے۔ پولیس کے مطابق یہ چاروں افراد ریاض کے مرکزی شہر میں واقع اپنی رہائش گاہ میں جعلی اقاموں کا کاروبار کر رہے تھے۔ ملزمان غیر قانونی طور پر مقیم تارکین اور سرحدوں سے چھُپ چھپا کر داخل ہونے والوں کو جعلی اقامے تیار کر کے دیتے تھے۔
پولیس نے ان افراد کوچھاپہ مار کر رنگے ہاتھوں اقامے تیار کرتے گرفتار کیا۔ ان کے قبضے سے 371 جعلی اقامے بھی برآمد ہوئے۔ ریاض پولیس کے معان ترجمان خالد الکریدیس نے بتایا کہ پولیس کو کسی نے مخبری کی تھی کہ ریاض کے رہائشی علاقے میں چار پاکستانی جعلی اقامے تیار کر رہے ہیں۔ جس کے بعد ان کے ٹھکانے پر چھاپہ مار کر سینکڑوں جعلی اقامے اور ان کی تیاری میں استعمال ہونے والا سامان بھی ضبط کر لیا گیا۔ملزمان کی عمریں 18 سے 40 سال کے درمیان ہیں۔ ملزمان کے خلاف جعل سازی کا مقدمہ درج کر کے انہیں پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ ماہ بھی سعودی عرب میں جعلی اقاموں اور ڈرائیونگ لائسنس کی فروخت میں ملوث پانچ رُکنی گینگ پکڑا گیا تھا جس میں 2 پاکستانی بھی شامل ہیں۔ یہ گینگ پولیس کو کافی عرصے سے مطلوب تھا۔ پولیس کی جانب سے اس گروہ پر کافی عرصے سے نظر رکھی گئی تھی۔ثبوت ملنے کے بعد اس گینگ کے تمام ارکان کو گرفتار کر لیا گیا جن میں 2 پاکستانی، 1 سعودی اور 2 شامی باشندے شامل ہیں۔ ریاض پولیس کے ترجمان کے مطابق یہ لوگ غیر قانونی تارکین کو جعلی اقامے فروخت کرتے تھے۔ان جعلسازوں کے اڈے پر چھاپہ مارا گیا تو وہاں سے 91 جعلی اقامے برآمد ہوئے۔ جس کے بعد ان پانچوں افراد کو گرفتار کر لیا گیا جن کی عمریں 30 سے 50 سال کے درمیان بتائی گئی ہیں۔
یہ جعلساز گروہ ان غیر قانونی تارکین کو جعلی اقامے، ورک پرمٹ اور ڈرائیونگ لائسنس بنا کر دیتا تھا جو قانون محنت کی خلاف ورزی میں ملوث تھے یا پھر غیر قانونی طور پر سعودی عرب کی سرحد سے داخل ہوئے تھے۔ ان جعلسازوں نے اپنی غیر قانونی سرگرمیوں کا اعتراف کر لیا ہے۔ پولیس کی جانب سے انہیں مزید تفتیش کے لیے پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کر دیا ہے جو اگلے چند روز میں ان کے خلاف استغاثہ کا کیس بنا کر عدالت میں پیش کر دے گی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.