دنیا کی امیر ترین ریاست کویت کا خزانہ خالی ہونے لگا

دنیا کی امیر ترین ریاست کویت کا خزانہ خالی ہونے لگا

اکتوبر کے بعد ملک کے پاس تنخواہیں دینے کے لیے پیسے نہیں بچیں گے. مستعفی کویتی وزیرخزانہ
نیویارک دنیا کی امیر ترین ریاست کویت کا خزانہ تیزی سے خالی ہوتا جا رہا ہے امریکی جریدے بلوم برگ نے اپنی حالیہ رپورٹ میں بتایا ہے کہ تیل کی دولت سے مالامال دنیا کی امیر ترین ریاستوں میں سے ایک کویت کا خزانہ تیزی سے خالی ہو رہا ہے جس سے صورتحال تیزی سے تبدیل ہو رہی ہے.
رپورٹ کے مطابق حال ہی میں مستعفی ہونے والے کویتی وزیرخزانہ بارک نے متنبہ کیا تھا کہ اکتوبر کے بعد ملک کے پاس تنخواہیں دینے کے لیے پیسے نہیں بچیں گے‘عالمی وبا کورونا وائرس کے باعث پیدا ہونے والی صورتحال اور قابل تجدید توانائی کے استعمال سے تیل کی طلب میں نمایاں کمی آئی ہے اس وجہ سے سعودی عرب سمیت تمام خلیجی ریاستیں شدید معاشی دباﺅ میں ہیں اور خود کو تیل کی معیشت کے بعد کی دنیا کے لیے تیار کر رہی ہیں. رپورٹ کے مطابق کویت کی آمدنی کا 90 فیصد حصہ ہائیڈرو کاربن پر انحصار کرتا ہے 80 فیصد کویتی ریاست کے ملازم ہیں جن کے اوسط ایک ماہ خرچ 2 ہزار ڈالر ہے تنخواہوں اور سبسڈیوں سے ریاست کے اخراجات کا تین چوتھائی حصہ بڑھ جاتا ہے اور تیل کی مانگ میں کمی کے باعث حکومت 2014 سے مسلسل خسارے کا سامنا کر رہی ہے. کویت کی آبادی کا 70 فیصد حصہ غیر ملکی افراد پر مشتمل ہے یہ بل اس تعداد کو 30 فیصد تک لانے کا ارادہ رکھتا ہے بھارتی شہری کویت کی غیر ملکی کمیونٹی کا بڑا حصہ ہیں اور انھیں اس بل سے متاثر ہونے کا خدشہ سب سے زیادہ ہے.
انجینئرنگ کمپنی لیرسن اینڈ ٹربو کے چیف ایگزیکٹیو انڈین شہری پراتک ڈیسائی گذشتہ 25 برس سے کویت میں مقیم ہیں لیکن کویت میں غیر ملکی ملازمین کی تعداد کو کم کرنے کے ایک مجوزہ قانون کی جزوی طور پر منظوری کے بعد ان کا مستقبل غیر یقینی کی صورتحال سے دوچار ہے. اس مجوزہ قانون کو کویت کی قومی اسملبی کی قانون ساز کمیٹی نے منظور کیا ہے لیکن اس کو مکمل قانون بننے کے لیے حکومت کی منظوری درکار ہے اگر ایسا ہو جاتا ہے تو پراتک ڈیسائی سمیت 8 لاکھ انڈین شہریوں کو کویت چھوڑنا پڑ سکتا ہے ماہرین کا خیال ہے کہ یہ اقدام کویت کی معیشت میں سست روی اور مقامی افراد میں ملازمتوں کی بڑھتی ہوئی مانگ کی وجہ سے اٹھایا گیا ہے. اس بل کے لاگو ہونے سے انڈیا کے علاوہ پاکستان، فلپائن، بنگلہ دیش، سری لنکا اور مصر سے کام کی خاطر کویت جانے والے افراد بھی متاثر ہوں گے انڈین حکومت نے کہا ہے کہ اس نے اس بل کے حوالے سے کویت کے ساتھ مذاکرات کا آغاز کر دیا گیا ہے.

Sharing is caring!

Comments are closed.