کویت میں غیرملکی ملازمین کا ڈیٹا تیار کرنا شروع

کویت؛ 60 سے زائد عمر والے کارکنوں کے اقامہ کی تجدید نہیں ہو گی

کویتی حکومت نے 60 برس کی عمر والے 68 ہزارغیرملکی کارکن کو سبکدوش کرنے کا فیصلہ کیا ہے-
کویتی جریدے الرای کے مطابق کویت میں افرادی قوت کے محکمے نے ایسے غیرملکی ملازمین کا ڈیٹا تیار کرنا شروع کردیا ہے جو 60 برس یا اس سے زیادہ عمر کے ہیں اور وہ ثانوی سکول پاس ہیں یا اس سے کم درجے والی ڈگری رکھتے ہیں- 2021 سے ایسے غیرملکی کارکن کے نہ تو ورک پرمٹ بنائے جائیں گے نہ ان کے ورک پرمٹ میں توسیع ہوگی اور نہ ہی انہیں نقل کفالہ کی سہولت دی جائے گی- ان سے متعلق تمام کارروائی بند کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے-
کویتی عہدیدار نے بتایا کہ ملک میں 60 برس یا اس سے زیادہ عمر والے غیرملکی کارکنان کی مجموعی تعداد 68318 ریکارڈ کی گئی ہے- یہ ایسے کارکن ہیں جو یا توثانوی پاس ہیں یا اس سے کم درجے کا سرٹیفکیٹ رکھتے ہیں- محکمہ افرادی قوت کےعہدیدار کا کہنا ہے کہ وہ غیرملکی کارکن جن کی عمر 59 برس ہوچکی ہے یا وہ فی الوقت ساٹھ برس کے ہیں ان کی مدت ملازمت میں ایک برس تک کی توسیع ہوسکتی ہے- البتہ یکم جنوری 2021 سے 60 برس یا اس سے زیادہ عمر والے کسی بھی غیرملکی کی مدت ملازمت میں توسیع نہیں ہوگی- ایسے تمام کارکنان کو زیادہ سے زیادہ 2021 کے آخر تک ملک چھوڑنا ہوگا-

Sharing is caring!

Comments are closed.