سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے سعودی اقامہ ہولڈرز کے لیے خصوصی رعایت کا اعلان

سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے سعودی اقامہ ہولڈرز کے لیے خصوصی رعایت کا اعلان
صرف ایسے ویزہ ہولڈر جو 20 مارچ کے بعد سے سعودیہ واپس نہیں آسکے، ان کے اقاموں اور خروج و عودہ کی مُدت میں بغیر فیس تین ماہ کی توسیع ہوگی

ریاض چند روز قبل سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے سعودی اقامہ ہولڈرز کے لیے خصوصی رعایت کا اعلان کیا تھا جس کے تحت ان کے اقاموں اور خروج وعودہ کی مُدت میں تین ماہ کی توسیع کر دی گئی تھی، تاہم یہ سہولت صرف ان ویزہ ہولڈرز کے لیے ہے جو چھٹی پر وطن گئے گئے ہوئے تھے مگر 20 مارچ کے بعد پروازوں پر پابندی کی وجہ سے دوبارہ مملکت نہیں آ سکے ہیں۔ اُردو نیوز کے مطابق ان کے اقاموں اور خروج و عودہ کی مدت میں 3 ماہ کی توسیع کے احکامات صادر ہو چکے ہیں جن پر عمل درآمد جاری ہے۔ایوان شاہی کی جانب سے تارکین کے لیے خصوصی مراعات کا اعلان ہونے کے بعد بیرون ملک پھنس جانے والے تارکین کے اقاموں اور خروج وعودہ کی مدت میں 3 ماہ کی توسیع عارضی ہے اگر اس دوران حالات نارمل ہو گئے اور پروازوں پر عائد پابندی ختم ہو گئی تو باہر گئے ہوئے تارکین کی واپسی کا اعلان کر دیا جائے گا۔ ایوان شاہی سے جن مراعات کا اعلان کیا گیا تھا وہ صرف ان تارکین کے لیے ہے جوچھٹی پر مملکت سے باہر گئے ہوئے ہیں اور ان کا خروج وعودہ یا اقامہ ایکسپائر ہورہا تھا مگر حالیہ کورونا وائرس کی وجہ سے بین الاقوامی پروازوں پر عائدپابندی کے سبب وہ مملکت نہیں آ سکے تھے۔ایوان شاہی کی جانب سے دی جانے والی مراعات سے بیرون مملکت گئے ہوئے تارکین ہی مستفید ہو سکتے ہیں جبکہ وہ غیر ملکی جو سعودی عرب میں موجود ہیں ان کے لیے حالیہ دی جانے والی مراعات نہیں ہیں۔
سعودی عرب میں مقیم اگر کسی پاکستان کا اقامہ ختم ہونے کے قریب ہے تو وہ اس کی ایکسپائری کی تاریخ سے قبل فوری طور پرتجدید کرا لے وگرنہ اقامہ کی عدم تجدید پرجرمانہ عائد ہو گا۔ اس لیے اقامہ کی مدت میں توسیع کر لیں تاکہ جرمانے سے بچ سکیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.