امریکہ پاکستان کی مدد کے لیے میدان میں آگیا

امریکہ کی جانب سے پاکستان کو مزید 100 وینٹی لیٹرز فراہم
امریکی سفیر پال ڈبلیو جونز نے دوسری کھیپ چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل کے حوالے کی

اسلام آباد امریکہ کی جانب سے پاکستان کو مزید ایک سو وینٹیلیٹرز فراہم کر دیئے گئے۔ پاکستان میں امریکہ کے سفیر پال ڈبلیو جونز نے وینٹیلیٹرز کی دوسری کھیپ چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل کے حوالہ کی۔ جمعرات کو وینٹیلیٹرز کی حوالگی کی تقریب کے موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے چیئرمین این ڈی ایم اے نے کہا کہ ہماری یہاں موجودگی مل کر کام کرنے کے جذبہ کی عکاسی کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کورونا وائرس کی وبا کے خطرات سے مکمل طور پر آگاہ ہے، وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں حکومت کو ملک میں کورونا وائرس کی وبا کو کنٹرول کرنے میں خاطر خواہ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ صحت کے نظام کو بہتر بنایا ہے، حکومت کے عزم کی وجہ سے ٹیسٹنگ کی صلاحیت کو ایک لاکھ روزانہ پر لے گئے ہیں، ہسپتالوں اور قرنطینہ سینٹرز کی صلاحیت کو بھی بڑھایا ہے۔ چیئرمین این ڈی ایم اے نے کہا کہ یہ امریکی حکومت کے تعاون سے موصول ہونے والی وینٹیلیٹرز کی دوسری کھیپ ہے، اس سے پاکستان کی صلاحیت میں مزید اضافہ ہوگا۔ امریکی حکومت ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو بھی تربیت فراہم کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت پاکستان اور این ڈی ایم اے کی جانب سے دوستی کی علامت کو وصول کرتے ہوئے شکریہ ادا کرتے ہیں۔
اس موقع پر امریکی سفیر نے اپنے خطاب میں کہا کہ صدر ٹرمپ اور وزیراعظم عمران خان نے مل کر کورونا وائرس کی وبا کا مقابلہ کرنے کا عزم کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وینٹیلیٹرز کی دوسری کھیپ ہے، پہلی کھیپ کراچی میں دی گئی تھی جس کو ہسپتالوں میں منتقل بھی کیا جاچکا ہے۔ یہوینٹیلیٹرنمونیہ اور سانس کی بیماریوں میں بھی مدد کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ پاکستان اور امریکہ کی شراکت داری ایک مثال ہے، پاکستانی میڈیکل سٹاف کو ان کے استعمال کی تربیت بھی دی جائے گی، ہم صوبائی ایمرجنسی آپریشن سینٹرز کو بھی جدید بنارہے ہیں۔ امریکی سفیر نے کہا کہ ہمیں پاکستان کے ساتھ شراکت داری پر فخر ہے، ہم مل کر اس وبا کو شکست دیں گے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.