میرپور میں 1985ءسے 2016تک پلاٹوں کی الاٹمنٹ میں ملوث اہم آفیسران کیخلاف کاروائی

میرپور میں 1985ءسے 2016تک پلاٹوں کی الاٹمنٹ میں ملوث اہم آفیسران کیخلاف کاروائی

میرپور(ظفر مغل/خبر نگار)میرپور میں 1985ءسے 2016تک پلاٹوں کی الاٹمنٹ کے دھندے پر سپریم کورٹ آزاد کشمیرمیں زیر سماعت مقدمہ میں اعلیٰ عدالتی حکم پر میونسپل کارپوریشن میرپور کے اسٹیٹ آفیسر ،انچارج شعبہ تجاوزات اور انسپکٹر تجاوزات معطل ،اسٹیٹ برانچ اور عملہ تجاوزات میں بھی اکھاڑ پچھاڑ ، میونسپل کارپوریشن اور ادارہ ترقیات نے تجاوزات کے خلاف گرینڈ آپریشن کلین اپ شروع کر دیا ۔1696 پلاٹوں کی مفت بحالی کی خبر کی سب سے پہلے خبریں میں شائع ہونے پر عوام کا خیر مقدم ومبارکباد، تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز خبریں میں میرپور شہر میں 1985سے 2016ءتک 1696رہائشی پلاٹوں کی الاٹمنٹ کی مفت بحالی اور منتقلی لیٹر سپریم کورٹ کی ہدایت اور وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان کی اصولی منظوری کی خبر سب سے پہلے شائع ہوئی اور اب سپریم کورٹ کے حکم پر سیکرٹریٹ لوکل گورنمنٹ ودیہی ترقی مظفرآباد نے نوٹیفکیشن نمبری س ل گ/شعبہ دوئم2020/10088-10101 مورخہ 30جون کے تحت چیئرمین لوکل گورنمنٹ بورڈ مجاز اتھارٹی وزیر بلدیات ودیہی ترقی آزاد کشمیر نے سپریم کورٹ آزاد جموں وکشمیر کے حکم پر کمشنر میرپور ڈویژن کی انکوائری رپورٹ کی روشنی میں میونسپل کارپوریشن کے پلاٹ نمبر H-120سیکٹر سی ٹو میرپور کے متصل رقبہ پر ناجائز تجاوزات /غیر قانونی تعمیرات میں ملوث میونسپل کارپوریشن میرپور کے زیر انکوائری آفیسران اسٹیٹ آفیسر راجہ محمد علی ،انچارج شعبہ کنٹرول تجاوزات چوہدری بشارت حسین اور انسپکٹر انسداد تجاوزات سرداربلال احمد کو کشمیر کونسل سروسز ایفی شنسی اینڈ ڈسپلن رولز 1996کے قاعد(1)6کے تحت معطلی کی منظوری دیدی ہے جس پر عمل درآمد کرتے ہوئے تینوں آفیسران کو معطل کرنے کیساتھ ساتھ شعبہ اسٹیٹ اور انسداد تجاوزات میں اکھاڑ پچھاڑ کر دی گئی ہے میونسپل کارپوریشن میرپور کے ایڈمنسٹریٹر طاہر مرزا نے خبریں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ میاں محمد روڈ پر سیکٹرسی ٹو کے پلاٹ نمبر H-120کے متصل 20×62فٹ رقبہ پر چار منزلہ عمارت تجاوز شدہ رقبہ کی مسمارگی اعلیٰ عدالتی حکم پر بلدیہ اعلیٰ کی نگرانی میں تجاوز کنندہ ارشد علی خان اور محمد علی خان وغیرہ از خود مسمارگی کر رہے ہیں جو آئندہ چند روز میں مکمل ہو جائے گی۔ انہوں نے اسٹیٹ آفیسر اور دو آفیسران شعبہ تجاوزات کی سپریم کورٹ کے حکم کی تعمیل میں سیکرٹریٹ لوکل گورنمنٹ کے نوٹیفکیشن کے بعد معطلی کی تصدیق کرتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا کہ سپریم کورٹ کے حکم کی تعمیل میں سیکٹر ڈی ون اور کلیال سے باقاعدہ آپریشن کلین اپ کا آغاز کر دیا گیا ہے اور تجاوزات مسمارگی میں کسی سے کوئی رعایت یا ذاتی پسند وناپسند ہر گز نہیں برتی جائے گی۔ کورونا وباءکے سمارٹ لاک ڈاﺅن کے باعث آپریشن التواءکا شکار ہوا مگر اب سپریم کورٹ کے حکم پر اسے دوبارہ شروع کر دیا گیا ہے جو سیکٹر وائز مکمل کیا جائے گا۔ دوسری طرف ادارہ ترقیات میرپور نے بھی اپنے سیکٹرز میں ناجائز تعمیرات وتجاوزات کے خاتمہ کے لئے آپریشن کی تیاریاں مکمل کر لی ہیں جو آئندہ ایک دو روز میں شروع کر دیا جائے گا۔ ادھر میرپور کے شہریوں نے1985ءسے 2016ءتک کے 1696پلاٹوں کی مفت بحالی کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ سپریم کورٹ اور حکومت آزاد کشمیر مبارکباد کی مستحق ہے جو شہریوں کا دیرینہ پرانا مسئلہ حل کر رہی ہے جبکہ دوسری طرف ادارہ ترقیات میرپور نے بھی مفاد عامہ کی جگہوں ،پارکوں، مساجد، سیوریج لائنوں اور گرین بیلٹس سمیت لنک روڈ پر بھی پلاٹ الاٹ کر رکھے ہیں جن کی منسوخی اور مفاد عامہ کی جگہوں کی واگزاری کے لئے سپریم کورٹ کو از خود نوٹس لے کر ہدایات جاری کرنی چاہئیں تاکہ ادارہ ترقیات کے مفاد عامہ کے ناجائز الاٹیوں اور ناجائز تعمیرات کرنے والوں سے رقبے واگزار کروا کر قانون وانصاف کے مساوی تقاضے پورے کیے جائیں اور کوئی بلدیہ اعلیٰ کے پلاٹوں کی ناجائز تعمیرات کو مسمار کرنے پر انگلی نہ اٹھا سکے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.